• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اعرابی کے بیس سے زائد سوالات پر مشمل روایت

farooq

رکن
شمولیت
مارچ 12، 2011
پیغامات
53
ری ایکشن اسکور
191
پوائنٹ
73
السلام علیکم، مندرجہ ذیل سوال میں نے http://www.urdufatwa.com/ پر بھی پوچھا ہے۔ آپ حضرات کی بھی رہنمائی چاہئے۔ جزاکم اللہ۔۔

محترم، درج ذیل روایت کے اسنادی رہنمائی عطا فرمایئے، کیا یہ صحیح روایت ہے۔ سA: امیر (غنی) بننا چاہتا ہوں ۔ کیا کروں ؟ ج : قناعت اختیار کرو، امیر ہوجاؤ گے سB: میں بڑا عالم بننا چاہتا ہوں ؟ ج :تقویٰ اختیار کرو، عالم بن جائو گے۔ سC: عزت والا بننا چاہتا ہوں ؟ ج :مخلوق کے سامنے ہاتھ پھیلانا بند کردو ۔ سD: اچھا آدمی بننا چاہتا ہوں ؟ ج :لوگوں کو نفع پہنچانے والے بن جاؤ۔ سE: عادل بننا چاہتا ہوں ج :جسے اپنے لیے اچھا سمجھتے ہو، وہی دوسروں کے لئے بھی پسند کرو۔ سF: طاقتور بننا چاہتا ہوں ؟ ج :اللہ تعالی پر توکل کرو۔ سG: اللہ تعالی کے دربار میں خاص درجہ حاصل کرنا چاہتا ہوں؟ ج :کثرت سے ذکر (یادِ الٰہی )کرو۔ سH: رزق میں کشادگی چاہتا ہوں ؟ ج :ہمیشہ باوضو رہو۔ سI: دعاؤں کی قبولیت چاہتا ہوں ؟ ج :حرام نہ کھاؤ۔ سJ: ایمان کی تکمیل (و کاملیت) چاہتا ہوں ج :اخلاق اچھے کر لو۔ سK: روزقیامت گناہوں سے پاک ہوکر اللہ تعالیٰ سے ملنا چاہتا ہوں؟ ج :جنابت کے فوراً بعد غسل کیا کرو۔ سL: گناہوں میں کمی چاہتا ہوں؟ ج :کثرت سے استغفار کرو۔ سM: قیامت کے روز نور میں اٹھنا چاہتا ہوں ؟ ج :ظلم کرنا چھوڑدو۔ سN: چاہتا ہوں کہ اللہ تعالی میری پردہ پوشی فرمائے؟ ج :مخلوقِ خدا کی پردہ پوشی کیاکرو۔ سO: رسوائی سے بچنا چاہتا ہوں ؟ ج :زنا سے بچو ۔ سP: اللہ تعالی اور اس کے رسول اکا محبوب بن جاؤں؟ ج :اللہ اور اس کے رسول اکے محبوب کو اپنا محبوب بنا لو ۔ سQ: اللہ تعالی کا فرمانبردار بننا چاہتا ہوں؟ ج :فرائض کا اہتمام کیا کرو۔ سR: احسان کرنے والا بننا چاہتا ہوں ؟ ج :اللہ تعالی کی بندگی یوں کرو گویا تم اسے یا وہ تمھیں دیکھ رہا ہے۔ سS: کیا چیز گناہوں سے معافی دلاتی ہے ؟ ج :آنسو۔۔۔ عاجزی۔۔۔ اور بیماری سT: کیا چیز دوزخ کی آگ کو ٹھنڈا کرتی ہے؟ ج :دنیا کی مصیبتوں پر صبر سU: اللہ تعالی کے جلال کو کیا چیز ٹھنڈا کرتی ہے ؟ ج :چپکے چپکے (بغیر ریاکاری کے) صدقہ اور صلہ رحمی (حسنِ سلوک) سV: اللہ تعالی کے جلال سے بچنا چاہتا ہوں ؟ ج :لوگوں پر غصہ کرنا چھوڑ دو۔ سW: سب سے بڑی برائی کیا ہے؟ ج :برے اخلاق۔۔۔۔ اور بخل (کنجوسی۔ کسی نعمت کو آگے نہ پہنچانا) سX: سب سے بڑی اچھائی کیا ہے ؟ ج :اچھے اخلاق۔۔۔ تواضع۔۔۔۔ اور صبر (مسند امام احمد)
 

کفایت اللہ

عام رکن
شمولیت
مارچ 14، 2011
پیغامات
4,959
ری ایکشن اسکور
9,818
پوائنٹ
722
علاء الدين متقي الهندي (المتوفى975)نے درج ذیل الفاظ میں یہ روایت نقل کی ہے:
قال الشيخ جلال الدين السيوطي رحمه الله تعالى : وجدت بخط الشيخ شمس الدين بن القماح في مجموع له عن أبي العباس المستغفري قال : قصدت مصر أريد طلب العلم من الامام أبي حامد المصري والتمست منه حديث خالد بن الوليد فأمرني بصوم سنة ، ثم عاودته في ذلك فأخبرني باسناده عن مشايخه إلى خالد بن الوليد قال : رجاء رجل إلى النبي ص فقال : إني سائلك عما في الدنيا والآخرة ، فقال له : سل عما بدا لك ، قال : يا نبي الله ! أحب أن أكون أعلم الناس ، قال : اتق الله تكن أعلم الناس ، فقال : أحب أن أكون أغنى الناس ، قال : كن قنعا تكن أغنى الناس ، قال : أحب أن أكون خير الناس ، فقال : خير الناس من ينفع الناس فكن نافعا لهم ، فقال : أحب أن أكون أعدل الناس ، قال : أحب للناس ما تحب لنفسك تكن أعدل الناس ، قال : أحب أن أكون أخص الناس إلى الله تعالى ، قال : أكثر ذكر الله تكن أخص العباد إلى الله تعالى ، قال : أحب أن أكون من المحسنين ، قال : اعبد الله كأنك تراه فان لم تكن تراه فانه يرك ، قال : أحب أن يكمل إيماني ، قال : حسن خلقك يكمل إيمانك ، فقال : أحب أن أكون من المطيعين ، قال : أد فرائض الله تكن مطيعا ، فقال : أحب أن ألقى الله نقيا من الذنوب ، قال اغتسل من الجنابة متطهرا تلقى الله يوم القيامة وما عليك ذنب ، قال : أحب أن أحشر يوم القيامة في النور ، قال : لا تظلم أحدا تحشر يوم القيامة في النور ، قال : أحب أن يرحمني ربي ، قال : ارحم نفسك وارحم خلق الله يرحمك الله ، قال : أحب أن تقل ذنوبي ، قال : استغفر الله تقل ذنوبك ، قال :أحب أن أكون أكرم الناس ، قال : لا تشكون الله إلى الخلق تكن أكرم الناس ، فقال : أحب أن يوسع على في الرزق ، قال : دم على الطهارة يوسع عليك في الرزق ، قال : أحب أن أكون من أحباء الله ورسوله ، قال : أحب ما أحب الله ورسوله وأبغض ما أبغض الله ورسوله ، قال : أحب أن أكون آمنا من سخط الله ، قال : لا تغضب على أحد تأمن من غضب الله وسخطه ، قال : أحب أن تستجاب دعوتي ، قال : اجتنب الحرام تستجب دعوتك ، قال : أحب لا يفضحنى الله على رؤس الاشهاد ، قال : احفظ فرجك كيلا تفتضح على رؤس الاشهاد ، قال : أحب أن يستر الله على عيوبي ، قال : استر عيوب إخوانك يستر الله عيوبك ، قال : ما الذي يمحو عني الخطايا ، قال : الدموع والخضوع والامراض ، قال : أي حسنة أفضل عند الله ، قال : حسن الخلق والتواضع والصبر على البلية والرضاء بالقضاء ، قال : أي سيئة أعظم عند الله ، قال : سوء الخلق والشح المطاع ، قال : ما الذي يسكن غضب الرحمن ؟ قال : إخفاء الصدقة وصلة الرحم ، قال : ما الذي يطفئ نار جهنم ، قال : الصوم. [كنز العمال 16/ 129]

صاحب کنزالعمال نے اس روایت کو سیوطی کے حوالہ سے نقل کیا ہے اور سیوطی نے اس کی سند پیش نہیں کی ہے۔
لہٰذا یہ روایت غیرمعتبر ہے۔
حدیث کی کسی بھی کتاب میں یہ روایت نہیں ملتی ۔
اور اس روایت کے بارے میں جو یہ کہا جاتا ہے کہ اسے امام احمد نے روایت کیا ہے بھی سراسر غلط ہے کیونکہ امام احمد رحمہ اللہ کی کسی بھی کتاب میں یہ روایت موجود نہیں ہے وااللہ اعلم۔
 
Top