• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

9/11 کو دراصل ہوا کیا تھا؟

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
9/11 کو دراصل ہوا کیا تھا ۔۔۔۔۔ کچھ نہایت دلچسپ سوالات اور انکے ممکنہ جوابات ۔۔۔۔!

تمام دہشت گرد جہاز میں سوار ہوئے لیکن کسی ایک کا نام بھی مسافروں کی لسٹ میں نہیں تھا !!!

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

سازشی کہانيوں پر اندھا دھند يقين کرنے والوں کی جانب سے 911 کے حوالے سے ايک بار پھر اسی تشہيری مواد کا استعمال اور اسی سوچ کا پرچار کوئ اچنبے کی بات نہيں ہے۔

ليکن يہ امر يقينی طور پر حيران کن ہے کہ انتہائ ڈھٹائ کے ساتھ اسی مواد کو استعمال کيا جا رہا ہے جو اب يقینی طور پر نا صرف يہ کہ "باسی" بلکہ "غير متعلقہ" کے زمرے ميں آتا ہے بلکہ کئ ماہرين اور تنظيموں کی جانب سے ان کہانيوں کو غلط بھی ثابت کيا جا چکا ہے۔

جہازوں کے مسافروں کے حوالے سے جو سوال اٹھايا گيا ہے وہ کوئ نيا نہيں ہے بلکہ گزشتہ ايک دہائ کے دوران کی جانے والی تحقيقات کی روشنی ميں اس کی وضاحت پيش کی چکی ہے۔

يہ دعوی کہ کسی بھی ہائ جيکر کا نام جہاز کے مسافروں کی لسٹ ميں شامل نہيں تھا، بالکل لغو اور بے بنياد ہے اور سازش پسندوں کی بے چارگی اور بے بسی کو واضح کرتا ہے جو اب اپنے دلائل کو تقويت دينے کے ليے فلمی تاويليں اور غير حقيقی کہانيوں پر انحصار کر رہے ہيں۔

ميں آپ کو ايسی بے شمار رپورٹوں ميں سے ايک کا لنک دے رہا ہوں جس ميں آپ 11 ستمبر 2001 کو جن 4 ہوائ جہازوں کو استعمال کيا گيا اس ميں سوار تمام مسافروں کے نام، ان کے سيٹ نمبر اور جہاز ميں موجود ہائ جيکرز اور انکے سيٹ نمبرز کے متعلق تفصيل سے پڑھ سکتے ہيں۔

https://www.foreignpolicyjournal.com/2010/04/05/911-hijackers-not-on-flight-manifests/

اس ميں کوئ شک نہيں کہ 911 کے ذمہ دار دہشت گرد کئ سيکورٹی پروٹوکولز اور مراحل کو دھوکے سے طے کرنے ميں کامياب رہے تھے۔ ليکن واقعے کے اس پہلو کو نظرانداز نہيں کيا گيا تھا۔ اس کے برعکس اس ضمن ميں مکمل تفتيش کی گئ اور ايک تفصيلی کميشن رپورٹ کے ذريعے وضاحت کی گئ کہ دہشت گرد کس طريقے سے امريکہ کے اندر سفر کرنے ميں کامياب رہے۔ اس رپورٹ ميں آپ وہ تمام سفری دستاويزات، فارمز اور آئ ڈی کارڈز بھی ديکھ سکتے ہيں جو ان افراد نے استعمال کيے ۔

https://9-11commission.gov/report/

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,773
ری ایکشن اسکور
8,454
پوائنٹ
964
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

ريکارڈ کی درستگی کے ليے واضح رہے کہ نو گيارہ کے حادثے کے نتيجے ميں 61 ممالک کے 372 غير ملکی شہری ہلاک ہوۓ۔ ان کی تفصيل آپ اس ويب لنک پر ديکھ سکتے ہيں۔

http://brilliantmaps.com/9-11-victims/

جب آپ غير مسلموں کے خلاف مسلمانوں کی اس خود ساختہ "عظيم" کاميابی کا تذکرہ کرتے ہيں تو پھر اس حقيقت کو بھی ملحوظ رکھيں کہ اسی حادثے ميں بے شمار مسلمان بھی ہلاک ہوۓ تھے جن ميں ايک حاملہ مسلمان خاتون بھی شامل تھيں۔

https://www.thoughtco.com/muslim-victims-of-911-attack-2004638

اگر آّپ يہ سمجھتے ہيں کہ القائدہ، داعش، ٹی ٹی پی اور ديگر عالمی دہشت گرد تنظيموں نے عالمی منظر نامے پر تشدد اور بربريت کے جس فتنے کو روشناس کراويا ہے، وہ کسی بھی طور انسانی معاشرے کے کسی بھی مہذب طبقے کے ليے بہتری يا خير کا پيش خيمہ ہے – تو پھر آپ غلطی پر ہيں۔

دہشت گرد عناصر اور گروہ اپنے متاثرين ميں مذہب اور قوميت کی بنياد پر تفريق نہيں کرتے۔ ياد رہے کہ دہشت گردی کے عالمی حملوں ميں سب سے زيادہ نقصان تو خود مسلمانوں کا ہی ہوا ہے۔

اس ضمن ميں ايک رپورٹ

http://abcnews.go.com/Politics/muslims-absolutely-group-victimized-global-terrorism-researchers/story?id=48131273

علاوہ ازيں، داعش يا کوئ بھی اور دہشت گرد تنطيم جو خطے کے لوگوں کی حقيقی ترجمان ہونے کی دعويدار ہے اور اس بات پر بضد ہے کہ وہ درست مذہبی نظريے اور سوچ کی علم بردار ہے، ان کے دعوؤں ميں کوئ سچائ ہوتی تو پھر تو انھيں اب تک دنيا بھر ميں اسلامی ممالک کی حکومتوں، اہم مذہبی سکالرز اور اسلامی ممالک ميں عام عوام کی جانب سے پذيرائ حاصل ہوجانی چاہيے تھی۔ تاہم ايسا کچھ بھی نہيں ہے۔ تمام حاليہ رپورٹس، سروے اور عوامی راۓ عامہ پر مبنی تجزيے يہ واضح کرتے ہيں کہ يہ دہشت گرد تنطيميں اجتماعی سطح پر کسی بھی قسم کی قابل ذکر حمايت حاصل کرنے ميں يکسر ناکام رہی ہيں۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

سازشی کہانيوں پر اندھا دھند يقين کرنے والوں کی جانب سے 911 کے حوالے سے ايک بار پھر اسی تشہيری مواد کا استعمال اور اسی سوچ کا پرچار کوئ اچنبے کی بات نہيں ہے۔

ليکن يہ امر يقينی طور پر حيران کن ہے کہ انتہائ ڈھٹائ کے ساتھ اسی مواد کو استعمال کيا جا رہا ہے جو اب يقینی طور پر نا صرف يہ کہ "باسی" بلکہ "غير متعلقہ" کے زمرے ميں آتا ہے بلکہ کئ ماہرين اور تنظيموں کی جانب سے ان کہانيوں کو غلط بھی ثابت کيا جا چکا ہے۔

جہازوں کے مسافروں کے حوالے سے جو سوال اٹھايا گيا ہے وہ کوئ نيا نہيں ہے بلکہ گزشتہ ايک دہائ کے دوران کی جانے والی تحقيقات کی روشنی ميں اس کی وضاحت پيش کی چکی ہے۔

يہ دعوی کہ کسی بھی ہائ جيکر کا نام جہاز کے مسافروں کی لسٹ ميں شامل نہيں تھا، بالکل لغو اور بے بنياد ہے اور سازش پسندوں کی بے چارگی اور بے بسی کو واضح کرتا ہے جو اب اپنے دلائل کو تقويت دينے کے ليے فلمی تاويليں اور غير حقيقی کہانيوں پر انحصار کر رہے ہيں۔

ميں آپ کو ايسی بے شمار رپورٹوں ميں سے ايک کا لنک دے رہا ہوں جس ميں آپ 11 ستمبر 2001 کو جن 4 ہوائ جہازوں کو استعمال کيا گيا اس ميں سوار تمام مسافروں کے نام، ان کے سيٹ نمبر اور جہاز ميں موجود ہائ جيکرز اور انکے سيٹ نمبرز کے متعلق تفصيل سے پڑھ سکتے ہيں۔

https://www.foreignpolicyjournal.com/2010/04/05/911-hijackers-not-on-flight-manifests/

اس ميں کوئ شک نہيں کہ 911 کے ذمہ دار دہشت گرد کئ سيکورٹی پروٹوکولز اور مراحل کو دھوکے سے طے کرنے ميں کامياب رہے تھے۔ ليکن واقعے کے اس پہلو کو نظرانداز نہيں کيا گيا تھا۔ اس کے برعکس اس ضمن ميں مکمل تفتيش کی گئ اور ايک تفصيلی کميشن رپورٹ کے ذريعے وضاحت کی گئ کہ دہشت گرد کس طريقے سے امريکہ کے اندر سفر کرنے ميں کامياب رہے۔ اس رپورٹ ميں آپ وہ تمام سفری دستاويزات، فارمز اور آئ ڈی کارڈز بھی ديکھ سکتے ہيں جو ان افراد نے استعمال کيے ۔

https://9-11commission.gov/report/

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
آپ کے سب بیانات بھی باسی ہیں ، یہ بات روز روشن کی طرح واضح ہے کہ سب سے بڑا دہشت گرد امریکہ ہے ، ہر وہ سوچ ، تجزیہ ، تبصرہ جو امریکہ کو دہشت گردی کے حوالے سے معصوم قرار دے گا ، وہ یا تو معصوم ہے ، یا مجبور ہے ، یا پھر خود اس دہشت گردی کا حصہ ہے ۔
 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ​

داعش
نے افغانستان ميں 12 سکول تباہ کر ديے۔

عوام کی تعليم اور شعور تک رسائ سے خائف داعش، درسگاہوں اور سکولوں کو نشانہ بنا رہی ہے۔



فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ​

 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
آپ کے سب بیانات بھی باسی ہیں ، یہ بات روز روشن کی طرح واضح ہے کہ سب سے بڑا دہشت گرد امریکہ ہے ، ہر وہ سوچ ، تجزیہ ، تبصرہ جو امریکہ کو دہشت گردی کے حوالے سے معصوم قرار دے گا ، وہ یا تو معصوم ہے ، یا مجبور ہے ، یا پھر خود اس دہشت گردی کا حصہ ہے ۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

آپ نے بالکل درست تجزيہ کيا ہے کہ ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم کے جوابات ميں يکسانيت ہوتی ہے اور اس کی وجہ يہ ہے کہ سچ عام طور پر بوريت کا عنصر ليے ہوۓ ہوتا ہے کيونکہ ميں اس ميں کوئ رد وبدل يا "زاويے" نہيں ہوتے۔ اس کے برعکس اگر آپ نو گيارہ کے حوالے سے سينکڑوں کی تعداد ميں تشہير کی گئ ويڈيوز، تصاوير اور دلائل کو پڑھيں اور ديکھيں تو ان ميں تخليقی صلاحيتوں اور "مصالحے" کا استعمال بالکل واضح دکھائ ديتا ہے کيونکہ ان افراد کی سوچ يا ان کی تاويليں منطق يا ناقابل ترديد حقائق کی محتاج نہيں ہوتيں۔

جہاں تک آپ کا يہ عمومی دعوی ہے کہ امريکہ ہی تمام تر عالمی دہشت گردی کا ذمہ دار ہے تو اس ضمن ميں گزشتہ چند برسوں کے دوران ان بے شمار وسائل اور ان سے متعلق اعداد وشمار پر ايک نظر ڈاليں جو امريکہ نے اس عالمی عفريت کے سدباب کے ليے وقف کيے ہيں۔ دہشت گردی سے مقابلے کے ليے دنيا کے سرکردہ اسلامی ممالک سميت بے شمار ممالک کے ساتھ ہمارا وسیع ہوتا ہوا عالمی اتحاد اور داعش جيسی دہشت گرد تنظيموں کے محفوظ ٹھکانوں اور ان سے پنپنے والی دہشت گردی کی کاروائيوں سے عام شہريوں کو محفوظ رکھنے کے ليے دنيا کے مختلف ممالک تک اينٹيلی جينس، سازوسامان اور فوجی صلاحيتوں کی ترسيل آپ کی دليل کو غلط ثابت کرتی ہے۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,773
ری ایکشن اسکور
8,454
پوائنٹ
964
جہاں تک آپ کا يہ عمومی دعوی ہے کہ امريکہ ہی تمام تر عالمی دہشت گردی کا ذمہ دار ہے تو اس ضمن ميں گزشتہ چند برسوں کے دوران ان بے شمار وسائل اور ان سے متعلق اعداد وشمار پر ايک نظر ڈاليں جو امريکہ نے اس عالمی عفريت کے سدباب کے ليے وقف کيے ہيں۔ دہشت گردی سے مقابلے کے ليے دنيا کے سرکردہ اسلامی ممالک سميت بے شمار ممالک کے ساتھ ہمارا وسیع ہوتا ہوا عالمی اتحاد اور داعش جيسی دہشت گرد تنظيموں کے محفوظ ٹھکانوں اور ان سے پنپنے والی دہشت گردی کی کاروائيوں سے عام شہريوں کو محفوظ رکھنے کے ليے دنيا کے مختلف ممالک تک اينٹيلی جينس، سازوسامان اور فوجی صلاحيتوں کی ترسيل آپ کی دليل کو غلط ثابت کرتی ہے۔
جی اعداد و شمار بھی وہی درست ہیں ، جو آپ کے موقف کی حمایت میں ہوں ، باقی سب اعداد و شمار ، تجزیے اور رپورٹیں آپ کے بقول ’ تخلیقی صلاحتیں اور مصالحہ داریاں ‘ ہیں ۔
داعش کو تھپکی بھی امریکہ کی ہے ، اور مار بھی امریکہ ہی رہا ہے ، واقعتا امریکہ اپنے ہی پاؤں پر کلہاڑی مارہا ہے ، یہ اس کی دنیا میں امن و امان کے لیے بہت بڑی قربانی ہے ۔ اللہ کرے یہ کلہاڑی پاؤں کی بجائے ، اس کی گردن تک بھی پہنچ جائے ، تاکہ دنیا میں واقعتا حقیقی امن و امان ہو جائے ۔
 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
داعش کو تھپکی بھی امریکہ کی ہے ، اور مار بھی امریکہ ہی رہا ہے ،
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

داعش کی دہشت گرد کاروائيوں کے سدباب کے ليے عالمی سطح پر جاری کاوشوں ميں اس وقت 73 ممالک اور ان کی خود مختار حکومتوں کا تعاون اور مدد شامل ہے۔ ان ممالک کے نام اور ان کی کوششوں کی تفصيل اور دائرہ کار اس لنک پر موجود ہے۔

http://theglobalcoalition.org/en/home/

امريکی حکومت اس وسيع ہوتے ہوۓ اتحاد کا صرف ايک جزو ہے۔ يہ درست ہے کہ اس مشن کی کاميابی کے لیے امريکہ نے بے شمار وسائل فراہم کيے ہيں اور اس ضمن ميں کليدی کردار بھی ادا کيا ہے، تاہم ان کوششوں کو فعال کرنے کے ليے ہميں علاقائ اور بين الاقوامی فريقین کی مدد اور تعاون پر انحصار کرنا ہو گا۔

آپ جو دعوی کر رہے ہيں، وہ نا صرف ايک غير منطقی دليل ہے بلکہ عملی طور پر ايسا ممکن ہی نہيں ہے کيونکہ دنيا کے ستر سے زائد ممالک، ان کی حکومتوں اور درجنوں غير ملکی تنظيموں کو خفيہ طور پر ہمارے ساتھ کام کرنا پڑے گا تا کہ باقی کی دنيا کو يہ باور کروايا جا سکے کہ ہم داعش کے عفريت کو کچلنے کے ليے حقيقی کاوشيں کر رہے ہيں مگر پس پردہ ہم اس گروہ کو مبينہ طور پر مزيد مستحکم اور فعال کر رہے ہيں تا کہ وہ اپنی دہشت گرد کاروائيوں کو جاری رکھ سکے۔

يہ غير حقيقی اور غير منطقی بحث جو اکثر اردو فورمز پر موجود ہے جس کے تحت امريکہ پر آئ ايس آئ ايس سميت دہشت گرد تنظيموں کی پشت پنائ کا لغو دعوی کيا جاتا ہے، اسے پڑھ کر بے ساختہ يہ سوال سامنے آتا ہے کہ يہ قائدين اور جنگجو کس دليل اور محرک کے تحت اس بات پر مجبور ہو سکتے ہيں کہ وہ اپنے اس "دشمن" کے ايما پر اپنی جانوں کو خطرات ميں ڈالنے پر آمادہ ہو جائيں جو نا صرف يہ کہ اپنے تمام تر وسائل استعمال کر کے انھيں ختم کرنے کے درپے ہے بلکہ عالمی سطح پر بھی اور علاقائ سطح پر بھی اپنے شراکت داروں اور اتحاديوں کے ساتھ مل کر بے شمار قدغنوں اور پابنديوں کے ذريعے ان کا ناطقہ بند کر رہا ہے؟

 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,773
ری ایکشن اسکور
8,454
پوائنٹ
964
آپ جو دعوی کر رہے ہيں، وہ نا صرف ايک غير منطقی دليل ہے بلکہ عملی طور پر ايسا ممکن ہی نہيں ہے کيونکہ دنيا کے ستر سے زائد ممالک، ان کی حکومتوں اور درجنوں غير ملکی تنظيموں کو خفيہ طور پر ہمارے ساتھ کام کرنا پڑے گا تا کہ باقی کی دنيا کو يہ باور کروايا جا سکے کہ ہم داعش کے عفريت کو کچلنے کے ليے حقيقی کاوشيں کر رہے ہيں مگر پس پردہ ہم اس گروہ کو مبينہ طور پر مزيد مستحکم اور فعال کر رہے ہيں تا کہ وہ اپنی دہشت گرد کاروائيوں کو جاری رکھ سکے۔
يہ غير حقيقی اور غير منطقی بحث جو اکثر اردو فورمز پر موجود ہے جس کے تحت امريکہ پر آئ ايس آئ ايس سميت دہشت گرد تنظيموں کی پشت پنائ کا لغو دعوی کيا جاتا ہے، اسے پڑھ کر بے ساختہ يہ سوال سامنے آتا ہے کہ يہ قائدين اور جنگجو کس دليل اور محرک کے تحت اس بات پر مجبور ہو سکتے ہيں کہ وہ اپنے اس "دشمن" کے ايما پر اپنی جانوں کو خطرات ميں ڈالنے پر آمادہ ہو جائيں جو نا صرف يہ کہ اپنے تمام تر وسائل استعمال کر کے انھيں ختم کرنے کے درپے ہے بلکہ عالمی سطح پر بھی اور علاقائ سطح پر بھی اپنے شراکت داروں اور اتحاديوں کے ساتھ مل کر بے شمار قدغنوں اور پابنديوں کے ذريعے ان کا ناطقہ بند کر رہا ہے؟
اگر ساری دنیا دہشت گردی کے خلاف متحد ہے تو پھر بھی چند مٹھی بھر دہشت گرد قابو کیوں نہیں آرہے ؟؟ کچھ تو ہے جس کی پردہ داری ہے ۔
 
شمولیت
مئی 27، 2016
پیغامات
256
ری ایکشن اسکور
75
پوائنٹ
85
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

داعش کی دہشت گرد کاروائيوں کے سدباب کے ليے عالمی سطح پر جاری کاوشوں ميں اس وقت 73 ممالک اور ان کی خود مختار حکومتوں کا تعاون اور مدد شامل ہے۔ ان ممالک کے نام اور ان کی کوششوں کی تفصيل اور دائرہ کار اس لنک پر موجود ہے۔

http://theglobalcoalition.org/en/home/

امريکی حکومت اس وسيع ہوتے ہوۓ اتحاد کا صرف ايک جزو ہے۔ يہ درست ہے کہ اس مشن کی کاميابی کے لیے امريکہ نے بے شمار وسائل فراہم کيے ہيں اور اس ضمن ميں کليدی کردار بھی ادا کيا ہے، تاہم ان کوششوں کو فعال کرنے کے ليے ہميں علاقائ اور بين الاقوامی فريقین کی مدد اور تعاون پر انحصار کرنا ہو گا۔

آپ جو دعوی کر رہے ہيں، وہ نا صرف ايک غير منطقی دليل ہے بلکہ عملی طور پر ايسا ممکن ہی نہيں ہے کيونکہ دنيا کے ستر سے زائد ممالک، ان کی حکومتوں اور درجنوں غير ملکی تنظيموں کو خفيہ طور پر ہمارے ساتھ کام کرنا پڑے گا تا کہ باقی کی دنيا کو يہ باور کروايا جا سکے کہ ہم داعش کے عفريت کو کچلنے کے ليے حقيقی کاوشيں کر رہے ہيں مگر پس پردہ ہم اس گروہ کو مبينہ طور پر مزيد مستحکم اور فعال کر رہے ہيں تا کہ وہ اپنی دہشت گرد کاروائيوں کو جاری رکھ سکے۔

يہ غير حقيقی اور غير منطقی بحث جو اکثر اردو فورمز پر موجود ہے جس کے تحت امريکہ پر آئ ايس آئ ايس سميت دہشت گرد تنظيموں کی پشت پنائ کا لغو دعوی کيا جاتا ہے، اسے پڑھ کر بے ساختہ يہ سوال سامنے آتا ہے کہ يہ قائدين اور جنگجو کس دليل اور محرک کے تحت اس بات پر مجبور ہو سکتے ہيں کہ وہ اپنے اس "دشمن" کے ايما پر اپنی جانوں کو خطرات ميں ڈالنے پر آمادہ ہو جائيں جو نا صرف يہ کہ اپنے تمام تر وسائل استعمال کر کے انھيں ختم کرنے کے درپے ہے بلکہ عالمی سطح پر بھی اور علاقائ سطح پر بھی اپنے شراکت داروں اور اتحاديوں کے ساتھ مل کر بے شمار قدغنوں اور پابنديوں کے ذريعے ان کا ناطقہ بند کر رہا ہے؟

اصل میں امریکہ آپ جیسے سادہ لوح لوگوں کو بے وقوف بنا رہا ہے جس سے آپ جیسے لوگ غلط فہمی میں مبتلا ہیں ۔
جو سمجھنے والے ہیں وہ سمجھ چکے ہیں امریکہ کو کافی عرصے سے ۔۔
 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
اگر ساری دنیا دہشت گردی کے خلاف متحد ہے تو پھر بھی چند مٹھی بھر دہشت گرد قابو کیوں نہیں آرہے ؟؟ کچھ تو ہے جس کی پردہ داری ہے ۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

داعش کی جانب سے عالمی سطح پر دہشت گردی کے جس عفريت کو روشناس کروايا گيا ہے، اس کے سدباب کے ليے جو سب سے بڑا چيلنج عالمی برادری کو درپيش ہے وہ يہی ہے کہ ديگر جنگوں کی طرح يہ مجرم يونيفارم پہن کر کسی ميدان جنگ ميں مدمقابل نہيں ہيں۔ يہ بزدل عناصر گنجان آباد عوامی مقامات پر عام شہريوں کو نشانہ بناتے ہيں تا کہ خوف اور بربريت پر مبنی اپنی مہم کو آگے بڑھا سکيں۔

دہشت گردی ايک سوچ اور فکر ہے جسے صرف ميدان جنگ ميں ہی نہيں بلکہ کئ محاذوں پر شکست دينے کی ضرورت ہے۔ يہ جنگ محض بے شمار فوجی ميدان جنگ ميں اتارنے سے جيتی نہيں جا سکتی ہے۔ داعش کی پرتشدد سوچ کو شکست دينے کے ليے ايک مشترکہ عالمی کاوش وقت کی اہم ضرورت ہے جس ميں تمام فريقين کثير الجہتی حکمت عملی کے ذريعے اس فتنے کی سرکوبی کرنے ميں اپنا موثر کردار ادا کريں۔

اس ضمن ميں اتحادی ممالک کی مشترکہ کاوشوں کی تفصيل درج ذيل لنک پر موجود ہے جس ميں آپ ديکھ سکتے ہيں کہ داعش کو کمزور اور غير فعال کرنے کے ليے عالمی سطح پر کتنے مختلف حوالوں سے کوششيں کی جا رہی ہيں۔

http://theglobalcoalition.org/en/mission-en/

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,773
ری ایکشن اسکور
8,454
پوائنٹ
964
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

داعش کی جانب سے عالمی سطح پر دہشت گردی کے جس عفريت کو روشناس کروايا گيا ہے، اس کے سدباب کے ليے جو سب سے بڑا چيلنج عالمی برادری کو درپيش ہے وہ يہی ہے کہ ديگر جنگوں کی طرح يہ مجرم يونيفارم پہن کر کسی ميدان جنگ ميں مدمقابل نہيں ہيں۔ يہ بزدل عناصر گنجان آباد عوامی مقامات پر عام شہريوں کو نشانہ بناتے ہيں تا کہ خوف اور بربريت پر مبنی اپنی مہم کو آگے بڑھا سکيں۔

دہشت گردی ايک سوچ اور فکر ہے جسے صرف ميدان جنگ ميں ہی نہيں بلکہ کئ محاذوں پر شکست دينے کی ضرورت ہے۔ يہ جنگ محض بے شمار فوجی ميدان جنگ ميں اتارنے سے جيتی نہيں جا سکتی ہے۔ داعش کی پرتشدد سوچ کو شکست دينے کے ليے ايک مشترکہ عالمی کاوش وقت کی اہم ضرورت ہے جس ميں تمام فريقين کثير الجہتی حکمت عملی کے ذريعے اس فتنے کی سرکوبی کرنے ميں اپنا موثر کردار ادا کريں۔

اس ضمن ميں اتحادی ممالک کی مشترکہ کاوشوں کی تفصيل درج ذيل لنک پر موجود ہے جس ميں آپ ديکھ سکتے ہيں کہ داعش کو کمزور اور غير فعال کرنے کے ليے عالمی سطح پر کتنے مختلف حوالوں سے کوششيں کی جا رہی ہيں۔

http://theglobalcoalition.org/en/mission-en/

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
بات سے بتنگڑ بنانا آپ کے بائیں ہاتھ کا کھیل ہے ۔ ایک طرف آپ ملا عمر اور اسامہ جیسوں کو غاروں سے نکال لیتے ہیں ، دوسری طرف داعش والے آبادی سے قابو نہیں آرہے ۔
آپ کا ہدف میں سمجھ چکا ہوں ، غلط سلط ، اور متضاد معلومات کی اس قدر بھرمار کی جائے ، تاکہ ایک عام آدمی کو کوئی چیز سمجھ نہ آسکے جوں جوں غور کرتا جائے ، درد سر میں اضافہ ہوتا جائے ۔
 
Top