1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

سجدے کی حالت میں دونوں پیرکو ہٹائے رکھناسنت ہے

'نماز' میں موضوعات آغاز کردہ از مقبول احمد سلفی, ‏دسمبر 15، 2016۔

  1. ‏دسمبر 22، 2016 #21
    تبريز بن أبرار

    تبريز بن أبرار رکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 16، 2016
    پیغامات:
    51
    موصول شکریہ جات:
    6
    تمغے کے پوائنٹ:
    35

    اور اگر شیخ عثیمین رحمہ اللہ کا یہ استدلال صحیح ہے تو پہر اسی سے یحیی بن ایوب والی روایت کی تاعید بھی ہو جاتی ہے۔

    اللہ بھتر جانتا ہے۔
     
  2. ‏دسمبر 22، 2016 #22
    رضا میاں

    رضا میاں سینئر رکن
    جگہ:
    Virginia, USA
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    1,557
    موصول شکریہ جات:
    3,508
    تمغے کے پوائنٹ:
    384

    بہرحال اس استدلال سے پھر بھی قدموں کا ساتھ جڑے رہنا لازم نہیں ہے۔ شیخ ابن عثیمین کے نزدیک ابن خزیمہ والی روایت صحیح ہے اور شاید اسی لئے انہوں نے اس روایت کو مسلم والی روایت سے تطبیق دینے کے لئے یہ استدلال پیش کیا۔ جبکہ ہم جانتے ہیں کہ وہ روایت ان الفاظ کے ساتھ غلط ہے اور اس لئے مسلم کی روایت کی تشریح اس کے مطابق پیش کرنا بعید ہے۔
    ایک روایت کی دوسری صحیح روایت سے تطبیق پیش کرنا سمجھ میں آتا ہے لیکن ایک روایت کی واضح غلط اور منکر روایت سے تطبیق کرنا اس تطبیق کے صحیح ہونے کو لازم نہیں ٹھہراتا۔
     
  3. ‏دسمبر 22، 2016 #23
    مقبول احمد سلفی

    مقبول احمد سلفی سینئر رکن
    جگہ:
    اسلامی سنٹر،طائف، سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏نومبر 30، 2013
    پیغامات:
    1,242
    موصول شکریہ جات:
    353
    تمغے کے پوائنٹ:
    209

    یہاں پر دو بھائیوں کا سوال ہے کہ اگر دونوں پیر الگ الگ تھے تو ایک ہاتھ سے کیسے معلوم ہوسکتاہے کہ الگ الگ ہے ۔ محسن صاحب کا سوال
    تبریز صاحب اعتراض و استدلال
    یہ سوال پہلے مجھ سے کیا جاچکاتھا اس کا میں نے دو جواب دیا تھا۔ اس کا ایک جواب تو یہ ہوسکتا ہے کہ یہ رات کا واقعہ ہے اور بظاہر اندھیرے کا معاملہ لگتا ہے ۔ اور ہم سبھی جانتے ہیں کہ اندھیرے میں آدمی کسی چیز کو باربار ٹٹولتاہے تاکہ صحیح سے اس کی کیفیت معلوم کرسکے ۔ اسے ہم برت کے بھی دیکھ سکتے ہیں مثلا گھر میں اندھیرا ہو اور ہمیں کوئی سامان لینا ہوتو کیا ایک ہی بار میں وہ مطلوبہ سامان مل جائے گا یا باربار پہلے ٹٹولیں گے پھر اسے ہاتھ سے پکڑیں گے ۔
    ایک دوسرا جواب یہ ہوسکتا ہے کہ انسان کبھی کبھی دونوں ہاتھ سے کام کیا ہوتا ہے مگر کہتے وقت کہتا ہے میں اپنے ہاتھ سے کام کیا ہے ۔ مثلا کوئی برتن یا کپڑادھونے والا کہے کہ میں اپنے ہاتھ سے برتن دھویا یا کپڑا دھویا۔

     
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  4. ‏دسمبر 22، 2016 #24
    مقبول احمد سلفی

    مقبول احمد سلفی سینئر رکن
    جگہ:
    اسلامی سنٹر،طائف، سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏نومبر 30، 2013
    پیغامات:
    1,242
    موصول شکریہ جات:
    353
    تمغے کے پوائنٹ:
    209

    اس پہ کیا تبصرہ کیا جائے ؟
     
  5. ‏دسمبر 22، 2016 #25
    تبريز بن أبرار

    تبريز بن أبرار رکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 16، 2016
    پیغامات:
    51
    موصول شکریہ جات:
    6
    تمغے کے پوائنٹ:
    35


    جی میرے عزیز مھترم،
    اگر آپ شیخ عثیمین رحمہ اللہ کا قول مالعہ کروگے تو انہونے پہلے صحیح مسلم کی حدیث سے استدلال کیا ہے فر اسکی تاعید مے یحیی بن ایوب کی روایت پیش کی ہے، اور پہر آپکا یہ کہنا کہ "واضح غلت اور منکر روایت" تو میرے بھائی روایت مے یحیی بن ایوب کی متابعت درکار ہے جس کہ نہ ہونے سے روایت غیر محفوظ ہے اگر متابعت ہوتی تو روایت صحیح کرار پاتی۔ کیوکہ یھیی بن ایوب مختلف فیہ ہے-
    اگر آپکو یہ استدلال درست نہی لگتا تو جو آپکو راجح لگتا ہے اس پر عمل کرے ہم نے بس استدلال ہی پیش کیا ہے کوئی حکم نہی۔ لوگوی کو جو موقف راجح لگے اسے اپنائے۔
    وإذا حكم فاجتهد ثم أخطأ فله أجر
    جزاک اللہ خیر۔
     
  6. ‏دسمبر 22، 2016 #26
    تبريز بن أبرار

    تبريز بن أبرار رکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 16، 2016
    پیغامات:
    51
    موصول شکریہ جات:
    6
    تمغے کے پوائنٹ:
    35

    ج
    جي شيخ صحيح فرمایا۔
    یہ لفظ مناصب نہی
     
  7. ‏دسمبر 22، 2016 #27
    مقبول احمد سلفی

    مقبول احمد سلفی سینئر رکن
    جگہ:
    اسلامی سنٹر،طائف، سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏نومبر 30، 2013
    پیغامات:
    1,242
    موصول شکریہ جات:
    353
    تمغے کے پوائنٹ:
    209

    عجیب بات ہے ایک طرف احترام کی بات کرتے ہیں دوسری طرف قومی عصبیت دکھارہے ہیں ۔
     
    • متفق متفق x 5
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  8. ‏دسمبر 22، 2016 #28
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,351
    موصول شکریہ جات:
    1,078
    تمغے کے پوائنٹ:
    398

    متفق تماما
     
  9. ‏دسمبر 22، 2016 #29
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,313
    موصول شکریہ جات:
    2,649
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    @مقبول احمد سلفی بھائی! میں تو کہتا ہوں کہ آپ اپنے نام میں الہندی کا اضافہ کیجئے!
    جب شاہ ولی اللہ محدث دہلوی ، ہو سکتے ہیں ابن عابدین شامی ہو سکتے ہیں، ابن تیمیہ الحرانی ہو سکتے ہیں، اور اور اور !
    تو مقبول احمد سلفی الہندی ہونے میں کیا حرج ہے!
    خیر ! امید کرتا ہوں کہ تابش بھائی نے کسی طعن کے لحاظ سے نہیں کہا ہو گا!
    میں ویسے جب دیکھتا ہوں کہ دنیا کے کسی چپے میں سلفی منہج کا علم بلند کئے ہوئے ہیں، مجھے بہت خوشی ہوتی ہے!
    جب مجھے دیوبندی علماء کے عقائد کے معاملہ میں کچھ اعتراض کا علم ہوا، تب سب سے پہلی تقریر جو میں نے سنی تھی وہ بھی ایک ہندی ، سلفی، اہل الحدیث عالم کی تھی! شیخ مقصود الحسن فیضی کی!
    تابش بھائی کی بات کو رفع دفعہ کیجئے! انہیں شاید اس بات کی سنجیدگی کا احساس نہ تھا، وہ اسے تساہل میں لکھ گئے!
    آخر میں ایک بات بطور لطیفہ ہی عرض کرتا ہوں!
    کہ اس فورم کے ساتھی نہ سہی لیکن کچھ لوگ ایسے ''سپر پاکستانی'' ضرور ہیں جو میری آپ سے محبت و تائید کی بناء پر مجھے ''غدار و انڈین اجینٹ'' ہی قرار دے دیں، کیونکہ میں ''مہاجر'' ہوں!
    اس بات کو لطیفہ تک ہی رکھیئے گا!
     
    Last edited: ‏دسمبر 22، 2016
    • پسند پسند x 3
    • زبردست زبردست x 2
    • لسٹ
  10. ‏دسمبر 22، 2016 #30
    مظاہر امیر

    مظاہر امیر مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏جولائی 15، 2016
    پیغامات:
    1,272
    موصول شکریہ جات:
    362
    تمغے کے پوائنٹ:
    176

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    یہی معاملہ لگتا ہے ، تساہل میں لکھ گئے ہیں وگرنہ غیرارادی نہ تھا تو انکو اسکی تصحیح کرنا چاہیئے ۔ دین سرحدوں کا پابند نہیں ہے ، اور نہ ہی عصبیت کی اجازت دیتا ہے ۔ شیخ مقبول سلفی ہوں ، شیخ ابوزید ضمیر ، شیخ معراج ربانی ، شیخ جلال الدین قاسمی ، شیخ کفایت اللہ (اللہ تعالیٰ ان سب کی حفاظت کرے) انکی دین کے لئے خدمات سے کون انکار کرسکتا ہے ۔
    @ابن داؤد بھائی لطیفے میں بھی بہت کچھ بیان کرگئے ہیں آپ !!
     
    • پسند پسند x 4
    • شکریہ شکریہ x 2
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں