• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

بازار میں داخل ہوتے وقت کی دعا

حافظ عمران الہی

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 09، 2013
پیغامات
2,101
ری ایکشن اسکور
1,451
پوائنٹ
344
کیا یہ اصول متقدمین محدثین کا ہے ؟

کیا متقدمیں محدثین سے ضعیف + ضعیف = حسن ليغر ه ثابت ہے؟
حافظ ابن القطان الفاسي نے حسن لغيرہ کے بارے ميں صراحت کي ہے : 'لايحتج بہ کلہ بل يعمل بہ في فضائل الأعمال...' ''اس ساري کے ساتھ حجت نہيں پکڑي جاتي بلکہ فضائل اعمال ميں اس پر عمل کيا جاتا ہے...۔'' (النکت علي کتاب ابن الصلاح: 402/1)
 

حافظ عمران الہی

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 09، 2013
پیغامات
2,101
ری ایکشن اسکور
1,451
پوائنٹ
344
کیا یہ اصول متقدمین محدثین کا ہے ؟

کیا متقدمیں محدثین سے ضعیف + ضعیف = حسن ليغر ه ثابت ہے؟
محترم جناب يہ کوئي اصول تو نہيں کہ متقدم جو بھي کہے وہ صحيح ہوتا ہے اور جو ان سے متاخر کہے وہ صحيح نہيں ہوتا
کسي کا زمانے کے لحاظ سے متقدم ہونا يہ کوئي دليل نہيں کہ جو ان سے زمناً متاخر ہو اس کي بات صحيح نہيں۔ اعتبار تو دلائل کو ہے نہ کہ شخصيات کو دلیل کے طور پر پیش کرنا ، آج ایسے بہت ساری احادیث موجود ہیں جن کو متقدمین نے صحیح کہا ہے ہم ان کو ضعیف قرار دے دیا ہے ایسا کیوں ہے ؟ کیوں کہ وہ حدیث ان کے نزدیک درجہ صحت پہنچتی تھی
 

تاج چوھان

مبتدی
شمولیت
ستمبر 13، 2012
پیغامات
15
ری ایکشن اسکور
27
پوائنٹ
13
حافظ ابن القطان الفاسي نے حسن لغيرہ کے بارے ميں صراحت کي ہے : 'لايحتج بہ کلہ بل يعمل بہ في فضائل الأعمال...' ''اس ساري کے ساتھ حجت نہيں پکڑي جاتي بلکہ فضائل اعمال ميں اس پر عمل کيا جاتا ہے...۔'' (النکت علي کتاب ابن الصلاح: 402/1)
اولا حافظ قطان الفاسی متقدمیں میں سے نہیں ہیں
ـ[بيان الوهم والإيهام في كتاب الأحكام]ـ
المؤلف: علي بن محمد بن عبد الملك الكتامي الحميري الفاسي، أبو الحسن ابن القطان (المتوفى: 628هـ)
المحقق: د. الحسين آيت سعيد
الناشر: دار طيبة - الرياض
الطبعة: الأولى، 1418هـ-1997م
عدد الأجزاء: 6 (5 أجزاء، ومجلد فهارس)
[ترقيم الكتاب موافق للمطبوع]
ثانیا :انہوں نے ضعیف + ضعیف = حسن ليغيره کی بات ہی نہیں کی

حافظ ابن القطان الفاسي نے حسن لغيرہ کے بارے ميں صراحت کي ہے : 'لايحتج بہ کلہ بل يعمل بہ في فضائل الأعمال...' ''اس ساري کے ساتھ حجت نہيں پکڑي جاتي بلکہ فضائل اعمال ميں اس پر عمل کيا جاتا ہے...۔'' (النکت علي کتاب ابن الصلاح: 402/1)
عباراتیں صاف ہیں کے ضعیف حدیث فضائل اعمال میں

اللہ یجزیک الخیر اخی
 

حافظ عمران الہی

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 09، 2013
پیغامات
2,101
ری ایکشن اسکور
1,451
پوائنٹ
344
اولا حافظ قطان الفاسی متقدمیں میں سے نہیں ہیں

ثانیا :انہوں نے ضعیف + ضعیف = حسن ليغيره کی بات ہی نہیں کی

عباراتیں صاف ہیں کے ضعیف حدیث فضائل اعمال میں

اللہ یجزیک الخیر اخی
محترم جناب يہ کوئي اصول تو نہيں کہ متقدم جو بھي کہے وہ صحيح ہوتا ہے اور جو ان سے متاخر کہے وہ صحيح نہيں ہوتا
کسي کا زمانے کے لحاظ سے متقدم ہونا يہ کوئي دليل نہيں کہ جو ان سے زمناً متاخر ہو اس کي بات صحيح نہيں۔ اعتبار تو دلائل کو ہے نہ کہ شخصيات کو دلیل کے طور پر پیش کرنا ، آج ایسے بہت ساری احادیث موجود ہیں جن کو متقدمین نے صحیح کہا ہے ہم ان کو ضعیف قرار دے دیا ہے ایسا کیوں ہے ؟ کیوں کہ وہ حدیث ان کے نزدیک درجہ صحت پہنچتی تھی
اور یہ بھی بتا دیں کہ متقدمین کی تاریخ کہاں سے شروع ہوتی ہے؟؟ کیا اس کے لیے کوئی تاریخ وضع کی گئی ہے ؟؟
 

تاج چوھان

مبتدی
شمولیت
ستمبر 13، 2012
پیغامات
15
ری ایکشن اسکور
27
پوائنٹ
13
اور یہ بھی بتا دیں کہ متقدمین کی تاریخ کہاں سے شروع ہوتی ہے؟؟ کیا اس کے لیے کوئی تاریخ وضع کی گئی ہے ؟؟
عبد الأول بن حماد الأنصاري نے اپنے والد حماد بن محمد الانصاری (رحمہ اللہ) سے سنا
77ـ وسمعته يقول: "إذا قال العلماء: عبارة (قال المتقدمون) فالمقصود من قبل القرن الرابع".
والقرون الثلاثة الأولى هي قرون علماء السلف، ثم أتى بعد القرن الثالث الخَلَفُ".

المجموع في ترجمة العلامة المحدث الشيخ حماد بن محمد الأنصاري جلد 2 ص 693
 

حافظ عمران الہی

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 09، 2013
پیغامات
2,101
ری ایکشن اسکور
1,451
پوائنٹ
344
عبد الأول بن حماد الأنصاري نے اپنے والد حماد بن محمد الانصاری (رحمہ اللہ) سے سنا
77ـ وسمعته يقول: "إذا قال العلماء: عبارة (قال المتقدمون) فالمقصود من قبل القرن الرابع".
والقرون الثلاثة الأولى هي قرون علماء السلف، ثم أتى بعد القرن الثالث الخَلَفُ".

المجموع في ترجمة العلامة المحدث الشيخ حماد بن محمد الأنصاري جلد 2 ص 693
موجوده زمانے کے علما کو کیوں پیش کر رہے ہو ؟ متقدمین میں سے کسی کا قول پیش کرو کیوں آج کل کے لوگوں کی بات تو تم خود مانتے نہیں ہو کیوں کہ تمہارے نزدیک صرف وہی بات مسلم ہے جو متقدمین سے ثابت ہو بعد میں آنے والے لوگ کا اصول تم مانتے نہیں ہو
 

تاج چوھان

مبتدی
شمولیت
ستمبر 13، 2012
پیغامات
15
ری ایکشن اسکور
27
پوائنٹ
13
موجوده زمانے کے علما کو کیوں پیش کر رہے ہو ؟ متقدمین میں سے کسی کا قول پیش کرو کیوں آج کل کے لوگوں کی بات تو تم خود مانتے نہیں ہو کیوں کہ تمہارے نزدیک صرف وہی بات مسلم ہے جو متقدمین سے ثابت ہو بعد میں آنے والے لوگ کا اصول تم مانتے نہیں ہو
ایک مسال پیش کرتا ہوں :
قلت: فمثله يحتمل حديثه التحسين، وقد كنت حسنت له حديثاً أخر في " المشكاة، (2341) بلفظ:
" كل بني أدم خطاء، وخير الخطائين التوابون ".
أما هذا؛ فقد حال بيني وبين تحسينه تضعيف الأئمة المتقدمين له واستنكارهم إياه، أعني: ابن حبان والعقيلي وابن عدي والذهبي، ويضاف اليهم أخرون؛ منهم: (عبد الحق الإشبيلي) ؛ فقد قال - كما كنت نقلته عنه في تخريجي لكتاب
" الإيمان " -:
سلسلة الأحاديث الضعيفة والموضوعة جلد 14 ص 945
 

حافظ عمران الہی

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 09، 2013
پیغامات
2,101
ری ایکشن اسکور
1,451
پوائنٹ
344
مثال چھوڑو اور موضوع کی طرف غور کرو، جناب یہ متقدمین اور متاخرین والی بات کرو مجھے یہ بتاؤ کہ بہت ساری ایسی احادیث جن کو متقدمین نے صحیح کہا ہے اور تم ان کو ضعیف کہہ رہے ہو ایسا کیوں ہے؟؟
 

طارق راحیل

مشہور رکن
شمولیت
جولائی 01، 2011
پیغامات
398
ری ایکشن اسکور
693
پوائنٹ
125
کیا میں اپنی دکان میں داخل ہونے پر یہی دعا پڑھنے کے لئے لگا سکتا ہوں؟
 
شمولیت
اگست 31، 2016
پیغامات
28
ری ایکشن اسکور
0
پوائنٹ
40
اس کلمے کے معانی ذہن نشین کرکے اپنے عقیدے کا حصہ بنا کر پڑھیں ہر طرح کا فائدہ ہوگا
 
Top