• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

جب حق آشکارہ ہو جائے، مگر پھر بھی کوئی اس پر نہ آئے

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,433
پوائنٹ
791
کوئی بھائی جواب دینا چاہے گا؟
وحی ربانی کے دلائل آنےکے بعد ان سے اعراض یا اختلاف کرنا محض ’’ نفس پرستی ‘‘ہے ، یہ بہت پرانا ،اور مہلک مرض ہے ،اہل کتاب میں یہ مرض عام تھا ‘
فَبَعَثَ اللَّهُ النَّبِيِّينَ مُبَشِّرِينَ وَمُنْذِرِينَ وَأَنْزَلَ مَعَهُمُ الْكِتَابَ بِالْحَقِّ لِيَحْكُمَ بَيْنَ النَّاسِ فِيمَا اخْتَلَفُوا فِيهِ وَمَا اخْتَلَفَ فِيهِ إِلَّا الَّذِينَ أُوتُوهُ مِنْ بَعْدِ مَا جَاءَتْهُمُ الْبَيِّنَاتُ بَغْيًا بَيْنَهُمْ فَهَدَى اللَّهُ الَّذِينَ آمَنُوا لِمَا اخْتَلَفُوا فِيهِ مِنَ الْحَقِّ بِإِذْنِهِ وَاللَّهُ يَهْدِي مَنْ يَشَاءُ إِلَى صِرَاطٍ مُسْتَقِيمٍ ( البقرة -213)
(انسانوں کے گمراہ ہونے کے بعد ) اللہ تعالی نے بشارت دینے والے اور ڈرانے والے انبیاء کو حق کے ساتھ کتاب دیکر اس لئے بھیجا تاکہ وہ انسانوں کے درمیان اختلاف کا (اس وحی والے حق سے )فیصلہ کر سکیں ،،لیکن ان انبیاء اور کتابوں کی آمد کے بعد ) جن لوگوں نے پھر بھی اختلاف کیا ،تو انہوں نے واضح دلائل کے بعد (حق کو رد کرتے ہوئے ) یہ اختلاف کیا ۔
علامہ ابن عاشور ؒ فرماتے ہیں :؛
فالله بعث الرسل لإبطال الضلال الحاصل من جهل البشر بصلاحهم فجاءت الرسل بالهدى ، اتبعهم من اتبعهم فاهتدى وأعرض عنهم من أعرض فبقي في ضلالة ، فإرسال الرسل لإبطال الاختلاف بين الحق والباطل ، ثم أحدث اتباع الرسل بعدهم اختلافا آخر وهو اختلاف كل قوم في نفس شريعتهم .

اللہ تعالی نے جہالت بشر کے سبب در آنے والی گمراہی کو مٹانے کیلئے ھدایت دے کر رسولوں کو مبعوث فرمایا ، سو پیروی کرنے والوں نے ھدایت کا سرمایا سمیٹا ،
اور منہ پھرنے والوں نے گمراہی میں رہنا اختیار کیا ۔
سو واضح ہوا کہ ۔رسولوں کی تشریف آوری اصل میں ۔۔حق و باطل کے درمیان اختلاف کو مٹانے کیلئے ہوتی ہے۔(یعنی انکی تعلیمات کے بعد اختلاف کی گنجائش نہیں
ہوتی ۔)
قرآن کریم میں واضح کردیا گیا ہے کہ :؛
وَلَئِنِ اتَّبَعْتَ أَهْوَاءَهُمْ مِنْ بَعْدِ مَا جَاءَكَ مِنَ الْعِلْمِ إِنَّكَ إِذًا لَمِنَ الظَّالِمِينَ (145) اور اے محبوب نبی ﷺ ! اگر آپ نے علم وحی آنے کے بعد ان کی خواہشات کی پیروی کی ۔۔تو آپ کا شمار بھی ظالموں میں ہوگا ؛؛

اور ایک مقام پر فرمایا::
فَإِنْ لَمْ يَسْتَجِيبُوا لَكَ فَاعْلَمْ أَنَّمَا يَتَّبِعُونَ أَهْوَاءَهُمْ وَمَنْ أَضَلُّ مِمَّنِ اتَّبَعَ هَوَاهُ بِغَيْرِ هُدًى مِنَ اللَّهِ إِنَّ اللَّهَ لَا يَهْدِي الْقَوْمَ الظَّالِمِينَ (50) القصص
اگر وہ آپ کی دعوت ،اور فیصلے تسلیم نہ کریں ،تو خوب اچھی طرح سمجھ لے کہ وہ محض اپنی خواہش کے بندے ہیں ؛
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ان نصوص کے پیش نظر حق کے دلائل فراہم کرنے کے باوجود حق تسلیم نہ کرنا ،بہت ہی خطرناک اور مہلک روش ہے ۔

 

محمد علی جواد

سینئر رکن
شمولیت
جولائی 18، 2012
پیغامات
1,988
ری ایکشن اسکور
1,523
پوائنٹ
304
و من یشاقق الرسول من بعد ما تبین لہ الہدی و یتبع غیر سبیل المؤمنین نولہ ما تولی و نصلہ جہنم و ساءت مصیرا ۔ (النساء)
جو ہدایت واضح ہو جانے کےبعد بھی رسول کی نافرمانی اور مومنوں کے سیدھے رستے کے الٹ چلتے ہیں ، ہم انہیں مزید گمراہی میں دھکیل دیں گے ، جہنم میں داخل کریں گے ، جو بہت برا ٹھکانہ ہے ۔
فليحذر الذين يخالفون عن أمره أن تصيبهم فتنه أو يصيبهم عذاب إليم ۔ ( الفرقان )
جو الله کے رسول کی حکم عدولی کرتے ہیں ، انہیں ڈرنا چاہیے ، فتنے میں مبتلا ہوسکتے ہیں یا دردناک عذاب کے مستحق بن سکتے ہیں ۔
جزاک الله - متفق

بہتر ہو کہ آیت کا نمبر بھی دے دیا کریں-
 

قاضی786

رکن
شمولیت
فروری 06، 2014
پیغامات
146
ری ایکشن اسکور
70
پوائنٹ
75
بہت شکریہ بھائی

یہ مسئلہ ہمارے ہاں بہت عام ہے

ہم حق کی نہیں

اپنے آبا و اجداد کی پیروی کر رہے ہیں
زمانے کی پیروی کرتے ہیں
خواہشات کی پیروی کرتے ہیں

کبھی کبھی وہ جو آیتوں میں آتا ہے کہ مشرکین کہتے تھے کہ ہم نے اپنے آبا و اجداد کو ان بتوں کو پوجتے دیکھا

وہ مجھے اس زمانے میں نظر آتا ہے

فرق ہی ہے کہ ہم اپنے خواہشات کے تابع ہیں
اور وہ بتوں کے

اللہ آپ دونوں کو جزائے خیر دے

امین
 

مون لائیٹ آفریدی

مشہور رکن
شمولیت
جولائی 30، 2011
پیغامات
640
ری ایکشن اسکور
407
پوائنٹ
127
و من یشاقق الرسول من بعد ما تبین لہ الہدی و یتبع غیر سبیل المؤمنین نولہ ما تولی و نصلہ جہنم و ساءت مصیرا ۔ (النساء)
متفق ۔
مومن مسلمان ، نام نہاد نہیں بلکہ گردن نہاد ہوتا ہے ۔کہ جس وقت بھی علم ہوجائے کہ یہ حق ہے اور وہ من وعن تسلیم کرے ۔
 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,777
ری ایکشن اسکور
8,403
پوائنٹ
964
متفق ۔
مومن مسلمان ، نام نہاد نہیں بلکہ گردن نہاد ہوتا ہے ۔کہ جس وقت بھی علم ہوجائے کہ یہ حق ہے اور وہ من وعن تسلیم کرے ۔
آفریدی بھائی اسی مناسبت سے ذرا ’’ نہاد ‘‘ کے معنی و مفہوم کی وضاحت کردیں ، کیونکہ میں خود بھی لفظ ’’ نام نہاد ‘‘ استعمال کرتا ہوں ، لیکن نہاد کے معنی کا صحیح پتہ نہیں ، بس سیاق و سباق کی رعایت سے کام چلا لیتا ہوں ۔ اب آپ نے لفظ ’’ گردن نہاد ‘‘ استعمال کیا تو اس کا صحیح معنی سمجھنے کی توجہ ہوئی ۔
 

مون لائیٹ آفریدی

مشہور رکن
شمولیت
جولائی 30، 2011
پیغامات
640
ری ایکشن اسکور
407
پوائنٹ
127
ویسے لغوی معنی تو مندرجہ ذیل ہیں
مثلاً۔ اصل، بنیاد، بیج، جڑ،
٢ - پیدائش، خلقت، نسل۔
٣ - باطن، بطون، دل، اندرونہ۔
٤ - طینت، خصلت، سرشت، خاصیت، طبیعت، وغیرہ ۔
لیکن فارسی میں یہ لوگ گردن نِہاد ان معنوں میں استعمال کرتے ہیں کہ جو شخص کسی کے آگے اپنا گردن رکھے اور مخاطب کو کہے کہ میری جان حاضر ہے ۔ آپ کی مرضی ہے ۔ میری گردن پر کیا کرنا ہے ۔
الغرض ۔ انتہا درجے کی تابعداری ۔
مذکورہ لفظ شیخ امین اللہ صاحب عموماً استعمال کرتے ہیں ۔
 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,777
ری ایکشن اسکور
8,403
پوائنٹ
964
جزاکم اللہ خیرا۔
 

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,433
پوائنٹ
791
ذرا ’’ نہاد ‘‘ کے معنی و مفہوم کی وضاحت کردیں ، کیونکہ میں خود بھی لفظ ’’ نام نہاد ‘‘ استعمال کرتا ہوں ، لیکن نہاد کے معنی کا صحیح پتہ نہیں ، بس سیاق و سباق کی رعایت سے کام چلا لیتا ہوں ۔ اب آپ نے لفظ ’’ گردن نہاد ‘‘ استعمال کیا تو اس کا صحیح معنی سمجھنے کی توجہ ہوئی ۔
نہاد2.jpg
 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,777
ری ایکشن اسکور
8,403
پوائنٹ
964
جزاكم الله خيرا ، بہترین وضاحت ہوگئی ۔
 
Top