• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

عید انصاف + قربانی انصاف

محمد آصف مغل

سینئر رکن
شمولیت
اپریل 29، 2013
پیغامات
2,677
ری ایکشن اسکور
4,006
پوائنٹ
436
میری راے میں یہ درست نہیں
جناب حافظ صاحب!
آپ کی رائے میں بہت سی باتیں درست نہیں ہوں گی۔
لیکن
کیا رائے بھی دین کا حصہ ہے ؟؟؟؟
کیا آپ کی رائے ہی مسلمانوں کے لئے مقدم ہے؟؟؟؟
 

محمد آصف مغل

سینئر رکن
شمولیت
اپریل 29، 2013
پیغامات
2,677
ری ایکشن اسکور
4,006
پوائنٹ
436
البتہ لفظ طاغوت کا اطلاق اگر کوئی عالم کرتا ہے تو اس کی گنجایش موجود ہے کیوں کہ یہ ایک شرعی اصطلاح ہے لیکن ضروری نہیں کہ اس سے اتفاق ہی کیا جائے
بالکل حافظ صاحب!
آپ سے توقع تو نہیں کہ آپ اتفاق کریں
لیکن
اللہ تعالیٰ سے ہم نااُمید بھی نہیں ہے۔

الا یہ کہ اس پر اجماع ہو جائے جو کہ ہنوز نہیں ہے۔
حافظ عسکری صاحب!
جب تک آپ جیسے علماء کرام
فقاہت رسول ﷺ پر نہیں چلیں گے
اجماع ہو ہی نہیں سکتا۔

ورنہ
رسول اللہ ﷺ نے عمر بن ہشام (ابو الحکم) (المعروف بہ ابو جہل) کو اُس کی زندگی میں ہی
امت محمدیہ (ﷺ) کا فرعون قرار دیا تھا۔
حافظ صاحب!
کیا آپ ماننے کے لئے تیار ہیں؟؟؟؟
حسب سابق کسی بٹن کے دبانے ہی کی توقع ہے فی الحال۔
 

طاہر اسلام

سینئر رکن
شمولیت
مئی 07، 2011
پیغامات
843
ری ایکشن اسکور
731
پوائنٹ
256
مجھے بہت ہی تعجب ہو رہا ہے محترم بھائی پر جو ایک شرعی مسئلے پر گفت گو کر رہے ہیں لیکن انھیں یہ معلوم نہیں کہ شریعت سے استدلال کا طریق کار کیا ہے؟
ابوالحکم کو جناب رسول اللہ ﷺ نے اس امت کا فرعون قرار دیا ہے جو بالکل درست ہے اس سے انکار کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا اسی طرح عہد رسالت مآب میں اسے ابو جہل کا لقب دیا گیا جو امرواقعہ ہے لیکن میرے مہربان اس پر غور کرنے کی زحمت گوارا نہیں کرتے کہ کیا اب اس سے یہ عمومی اصول نکل آیا کہ مخالف فرقے کے جس پیشوا کو چاہیں نام بگاڑ کر پکاریں؟؟تو پھر سوال یہ ہے کہ تمام بریلوی علما انھی عقائد کے حامل ہیں جو ڈاکٹر طاہر القادری کے ہیں تو اب سب کے نام بگاڑنا شروع کردیں!!!
ابوالحکم کو ابو جہل کہنا ایک استثنائی معاملہ ہے اور اس کا کردار اس بات کا گواہ ہے کہ وہ عناد و مخالفت رسول ﷺ میں حد سے بڑھا ہوا تھا لیکن اس دور میں بے شمار کفار تھے کیا اہل اسلام نے ان کے نام بگاڑے؟؟؟
پھر عبداللہ بن ابی کا معاملہ ہمارے سامنے ہے؛اس کی اسلام دشمنی پر کسے شک ہو سکتا ہے لیکن جب تک اس کے متعلق خاص وحی نازل نہ ہوئی رسول اللہ ﷺ کا طرزعمل کیا تھا؟ذرا اس پر بھی غور فرمالیں!!والسلام
 

طاہر اسلام

سینئر رکن
شمولیت
مئی 07، 2011
پیغامات
843
ری ایکشن اسکور
731
پوائنٹ
256
جناب حافظ صاحب!
آپ کی رائے میں بہت سی باتیں درست نہیں ہوں گی۔
لیکن
کیا رائے بھی دین کا حصہ ہے ؟؟؟؟
کیا آپ کی رائے ہی مسلمانوں کے لئے مقدم ہے؟؟؟؟
سخن فہمی کی بہت ہی عمدہ مثال ہے!!ماشاءاللہ
 

محمد فیض الابرار

سینئر رکن
شمولیت
جنوری 25، 2012
پیغامات
3,039
ری ایکشن اسکور
1,233
پوائنٹ
402
میرا کہنے کا مقصد یہ ہے کہ کسی معین شخص کو طاغوت قرار دینا دراصل اس پر ایک شرعی حکم کا انطباق ہے یعنی شریعت میں کچھ مخصوص صفات کے فرد کو طاغوت کہا گیا ہے
اب اس حکم کو ایک معین شخص پر لاگو کرنا استدلال ہی تو ہے اور کیا ہے؟؟
اب فرمائیے کیا طاہرالقادری صاحب کو طاغوت کہنے پر علما کا اجماع ہو گیا ہے؟؟ہرگز نہیں؛یہ ایسے ہی ہے جیسے کسی شخص کی تکفیر میں اختلاف ہو جائے مثلاً ابن عربی کہ بعض علما اس کی تکفیر کرتے ہیں اور بعض نہیں؛دونوں کا اپنا استدلال ہے اور یہی معاملہ یہاں ہے۔
میں ڈاکٹر طاہرالقادری کا حامی نہیں ہوں لیکن یہاں مسئلہ یہ نہیں ہے کہ ان کا حکم کیا ہے بل کہ اصل نکتہ یہ ہے کہ کیا ان کا نام بگاڑا جا سکتا ہے یا نہیں؟؟میری راے میں یہ درست نہیں البتہ لفظ طاغوت کا اطلاق اگر کوئی عالم کرتا ہے تو اس کی گنجایش موجود ہے کیوں کہ یہ ایک شرعی اصطلاح ہے لیکن ضروری نہیں کہ اس سے اتفاق ہی کیا جائے الا یہ کہ اس پر اجماع ہو جائے جو کہ ہنوز نہیں ہے۔
میں یہ بات پہلے ہی کہہ چکا ہوں کہ یہ میرا ذاتی تجربہ ہے ہو سکتا ہے کسی اور کا مشاہدہ اور تجربہ اس سے الگ ہو اور اجماع کا تو میں نے بھی نہیں لکھا لیکن اب تو اکثریت کا رجحان اس کی خلاف ہوتا چلا جا رہا ہے اور وہ دن دور نہیں جس دن اس کے خلاف اجماع بھی ہمارے سامنے آ جائے گا
اور نام بگاڑنے پر میں اپنی رائے دے چکا ہوں کہ وہ مناسب نہیں ہے
 
Top