1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ہم مساجد میں بم دھماکے نہیں کرتے ؟؟؟؟

'خوارج' میں موضوعات آغاز کردہ از ابو بصیر, ‏اگست 10، 2013۔

  1. ‏ستمبر 07، 2013 #31
    محمد ارسلان

    محمد ارسلان خاص رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    17,865
    موصول شکریہ جات:
    40,799
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,155

    نیکسٹ ٹائم اس قسم کی پوسٹ حذف کر دی جائے گی۔ ان شاءاللہ
     
  2. ‏ستمبر 07، 2013 #32
    اسحاق

    اسحاق مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏جون 25، 2013
    پیغامات:
    894
    موصول شکریہ جات:
    2,074
    تمغے کے پوائنٹ:
    196

    [/quote]
    صاحب اخلاق صاحب، تہاڈا اپنے بارے میں کیا خیال ہے. ابتسامہ
     
  3. ‏ستمبر 07، 2013 #33
    اسحاق

    اسحاق مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏جون 25، 2013
    پیغامات:
    894
    موصول شکریہ جات:
    2,074
    تمغے کے پوائنٹ:
    196

    [/quote]
    صاحب اخلاق صاحب، تہاڈا اپنے بارے میں کیا خیال ہے. ابتسامہ
     
  4. ‏ستمبر 08، 2013 #34
    القول السدید

    القول السدید رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 30، 2012
    پیغامات:
    348
    موصول شکریہ جات:
    950
    تمغے کے پوائنٹ:
    91

    سوال1:
    پولیس کی مسجد میں پولیس کے علاوہ باقی لوگ جو دھماکے کا شکار ہوئے،ان کے قتل کا کیا جواز ہے؟

    سوال2:
    کیا مسجد میں شرک کرنے کی وجہ سے مسجد مسجد نہیں رہتی؟اگر ہاں تو پھر شعیوں کے ساتھ ساتھ بریلویوں،دیوبندیوں کی مسجدیں مسجدیں ہی نہیں،ان کے جیسے مرضی دھماکوں سے اڑاؤ،جو مرضی کرو،یہ مسجدوں میں دھماکے کرنے کے زمرے میں نہیں آتا۔


    سوال3:
    مسجد میں موجود قرآن اور دوسری مقدس کتابوں کے نسخے بارود سے اڑانے کی دلیل کیا ہے؟وہ نسخے چاہے شعیوں کی مسجد میں ہوں یا حنفیوں کی مسجد میں۔

    اللہ کی قسم ان میں سے کسی ایک سوال کا جواب بھی دیا ہوا دیکھا دو،میں بات ہی ختم ۔

     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں