• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اثبات رفع الیدین

سٹیٹس
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدنا عبداللہ بن عمر فاروق رضی اللہ عنہما کی شہادت(گواہی)

41۔
عَنْ ابْنِ عُمَرَ رَضِیَ اﷲُ عَنْھُمَا اَنَّ رَسُوْلَ اﷲِ ﷺ کَانَ یَرْفَعُ یَدَیْہِ حَذْ وَمَنْکِبَیْہِ اِذَا افْتَتَح الصَّلوٰۃ وَاِذَا کَبَّرَ لِلرُّکُوْعِ وَاِذَا رَفَعَ رَاْسَہٗ مِنْ الرُّکُوْعِ رَفَعَھُمَا کَذٰلِکَ
سیدنا عبداللہ بن عمر فاروق رضی اللہ عنہما فرماتے ہیں کہ تحقیق رسول اللہ ﷺ جب نماز شروع کرتے تو ہمیشہ اپنے دونوں ہاتھ کندھوں تک اٹھایا کرتے تھے۔ پھر جب رکوع کے لئے تکبیر کہتے اور جب رکوع سے سر اٹھاتے تب بھی اسی طرح اپنے ہاتھ اٹھایا کرتے تھے۔
(بخاری ص102، مسلم ص168، ابوداؤد جلد1 ص192، ترمذی ص 36، ابن ماجہ ص 62، نسائی موطا مالک ص 97، موطامحمد ص89، مسند احمد جلد3 ص166، کتاب الام شافعی جلد 8 ص186، مسند شافعی ص 12، تلخیص الجیر ص82، فتح الباری جلد 2 ص 181، عمدۃ القاری جلد 3 ص5، منتقیٰ ص55، اعلام الموقعین ص256، دارقطنی ص 107، بیہقی جلد 2، ص 69، دارمی ص107، تجرید البخاری جلد 1 ص 173، جز ء بخاری ص 7 جزء سبکی ص 2، مشکوٰۃ المعلم جلد 2 ص533، رفع العجاجہ جلد 1 ص300، بلوغ المرام ص 46)۔
42۔
سیدنا عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہ سنت کے پروانے نے (کَانَ یَرْفَعُ یَدَیْہِ ) فرما کر اور موجب روایت بیہقی آخر میں (حَتّٰی لَقِیَ اﷲَ) لا کر یہ ثابت کر دیا کہ رسول اللہ ﷺ ابتدائے نبوت سے لے کر اپنی عمر کی آخری نماز تک رفع الیدین کرتے رہے۔
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
امام علی ابن المدینی رحمہ اللہ کا فیصلہ

43۔
امام ابن مدینی امام بخاری کے استاذ رحمہ اللہ فرماتے ہیں:
ھٰذَا الْحَدِیْثُ عِنْدِیْ حُجّۃٌ عَلَی الْخَلْقِ کُلُّ مَنْ سَمِعَہٗ فَعَلَیْہِ اَنْ یَّعْمَلَ بِہٖ لِاَنَّہٗ لَیْسَ فِیْ اِسْنَادِہٖ شَئٌ (تلخیص الجیر ص 81)
کہ عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہ کی حدیث میرے نزدیک تمام مخلوق پر حجت ہے کیونکہ اس میں رسول اللہ ﷺ کا فوت ہونے تک رفع الیدین کرنا ثابت ہے۔ پس جو مسلمان اس حدیث کو پڑھے یا سنے اس پر رفع الیدین کرنا لازم ہے کیونکہ اس کی سند میں کسی کو کلام نہیں۔
کرو دوستو! دل سے اطاعت نبی کی
نہیں فرض تقلید تم پر کسی کی
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدنا ابوقلابہ رضی اللہ عنہ کی شہادت(گواہی)

44۔
ابوقلابہ نے مالک بن حویرث رضی اللہ عنہ کو دیکھا:
اِذَا صَلَّیٰ کَبَّرَ وَ رَفَعَ یَدَیْہِ وَاِذَا اَرَادَ اَنْ یَرْکَعَ رَفَعَ یَدَیْہِ وَاِذَا رَفَعَ رَاسَہٗ مِنَ الرُّکُوْعِ رَفَعَ یَدَیْہِ وَ حَدَّثَ اَنَّ رَسُوْلَ اﷲِ ﷺ کَانَ یَفْعَلُ ھٰکَذَا (رواہ البخاری و مسلم)
کہ جب نماز کے لئے تکبیر کہی تو اپنے دونوں ہاتھ اٹھائے پھر جب رکوع کا قصد کیا اور رکوع سے سر اٹھایا تب بھی دونوں ہاتھ اٹھائے اور بیان کیا کہ رسول اللہ ﷺ ہمیشہ ایسا ہی کیا کرتے تھے۔
اس حدیث میں بھی (کَانَ یَفْعَلُ) موجود ہے۔
(بخاری ص102، مسلم ص168، فتح الباری جلد 2 ص 182، عمدۃ القاری جلد 3 صفحہ 10، بیہقی جلد 2 ص 27، منتقیٰ ص55، جزء سبکی ص2، جز ء بخاری ص 20)
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدنا مالک بن حُویرث رضی اللہ عنہ کی شہادت(گواہی)

45۔
عَنْ مَالِکِ بْنِ الْحُوَیْرِثِ قَالَ رَاَیْتُ رَسُوْلَ اﷲِ ﷺ رَفَعَ یَدَیْہِ اِذَا کَبَّرَ وَ اِذَا رَکَعَ وَاِذَا رَفَعَ رَاسَہٗ مِنَ الرُّکُوْعِ (رواہ ابوداوٗد)
46۔
وَعَنْہُ کَانَ النَّبِیُّ ﷺ یَرْفَعُ یَدَیْہِ اِذَا کَبَّرَ وَ اِذَا رَکَعَ وَاِذَا رَفَعَ رَاسَہٗ مِنَّ الرَّکُوْعِ (جز ء رفع الیدین بخاری ص 29)
سیدنا مالک بن حویرث رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ ﷺ کو بچشم خود دیکھا کہ نبی کریم ﷺ تکبیر تحریمہ اور رکوع میں جانے اور رکوع سے سر اٹھانے کے وقت رفع الیدین کیا کرتے تھے۔
(بخاری ص102، مسلم ص168، ابوداؤد جلد1 ص119، ابن ماجہ ص 62، نسائی ص89، مسند احمد جلد3 ص167، جز ء بخاری ص 9 ، مشکوۃ جزء سبکی ص 2،المعلم جلد 2 ص535، منتقیٰ ص55، دارمی ص 107، العجاجہ جلد 1صفحہ 301)
نوٹ
واضح رہے رفع الیدین نہ کرنے والوں پر کہ یہ صحابی 9ھ میں مسلمان ہوئے ہیں۔
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدنا انس رضی اللہ عنہ بن مالک کی شہادت(گواہی)

47۔
عَنْ اَنَسٍ اَنَّ رَسُوْلَ اﷲِ ﷺ کَانَ یَرْفَعُ یَدَیْہِ اِذَا دَخَلَ فِی الصَّلوٰۃِ وَاِذَا رَکَعَ وَاِذَا رَفَعَ رَاْسَہٗ مِنَ الرُّکُوْعِ (رَوَاہُ ابْنُ مَاجَہْ)
سیدنا انس رضی اللہ عنہ (جو دس سال دن رات آپ ﷺ کی خدمت میں رہے) فرماتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ جب بھی نماز میں داخل ہوتے اور رکوع کرتے اور رکوع سے سر اٹھاتے تو رفع الیدین کیا کرتے (وَسَنَدُہٗ صَحِیْحٌ) سبکی نے کہا سند اس کی صحیح ہے۔
(ابن ماجہ ص 62بیہقی جلد 2 ص 74، دارقطنی ص 108، جز ء بخاری ص 9 تلخیص ص 82، جز ء سبکی ص 4)
48۔
سیدنا انس رضی اللہ عنہ نے (کَانَ یَرْفَعُ ) فرما کر واضح کر دیا کہ رسول اللہ ﷺ نے دس سال میں ایسی کوئی نماز نہیں پڑھی جس میں رفع الیدین نہ کیا ہو ۔(تخریج ذیلعی جلد 1 ص214، مجمع الزوائد ص 182، التعلیق المغنی ص 110)
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما

49۔
عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ عَنِ النَّبِیِّ ﷺ کَانَ یَرْفَعُ یَدَیْہِ عِنْدَ الرَّکُوْعِ وَاِذَا رَفَعَ رَاسَہٗ (جز ء بخاری ص 13)
سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہ (جن کو سینہ مبارک سے لگا کر رسول اللہ ﷺ نے دعا فرمائی) فرماتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ ہمیشہ ہی رکوع میں جانے اور رکوع سے سر اٹھانے کے وقت رفع الیدین کیا کرتے تھے (ابن ماجہ ص 62)
50۔
سیدنا ابن عباس رضی اللہ عنہ نے (کَانَ یَرْفَعُ) فرمایا جو دوام اور ہمیشگی پر دلالت کرتا ہے۔
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدنا جابر بن عبداللہ رضی اللہ عنہما

51۔
عَنْ اَبِیْ الزُّبَیْرِ اَنَّ جَابِرَ بْنَ عَبْدِ اﷲِ کَانَ اِذَا افْتَتَحَ الصَّلوٰۃَ رَفَعَ یَدَیْہِ وَاِذَا رَکَعَ وَ اِذَا رَفَعَ رَأسَہٗ مِنَ الرُّکُوْعِ فَعَلَ مِثْلَ ذَالِکَ وَیَقُوْلُ رَایْتُ رَسُوْلُ اﷲ ﷺ فَعَلَ ذٰلِکَ (رَوَاہُ ابْنُ مَاجَہْ ص 62)۔
52۔
وَعَنْہُ عَنِ النَّبِیِّ ﷺ کَانَ یَرْفَعُ یَدَیْہِ عِنْدَ الرُّکُوْعِ وَاِذَا رَفَعَ رَاسَہٗ (جزء بخاری ص 13)
سیدنا جابر رضی اللہ عنہ ہمیشہ رفع الیدین کیا کرتے تھے اور فرمایا کرتے تھے کہ میں اس لئے رفع الیدین کرتا ہوں کہ میں نے بچشم خود رسول اللہ ﷺ کو رکوع جاتے اور رکوع سے سر اٹھاتے وقت رفع الیدین کرتے دیکھا کرتا تھا ۔ (بیہقی جلد 2 ص 74، جزء سبکی ص 5،بخاری ص 13)۔
اس حدیث میں بھی کَانَ یَرْفَعُ موجود ہے۔
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدنا ابوموسیٰ اشعری رضی اللہ عنہ

53۔
عَنْ اَبِیْ مُوْسٰی قَالَ ھَلْ اُرِیْکُمْ صَلوٰۃَ رَسُوْلِ اﷲِ ﷺ فَکَبَّرَ وَ رَفَعَ یَدَیْہِ ثُمَّ قَالَ سَمِعَ اﷲُ لِمَنْ حَمِدَہٗ وَ رَفَعَ یَدَیْہِ ثُمَّ قَالَ ھٰکَذَا فَاصْنَعُوْا رَوَاہُ الدَّارَمِیْ (جزء رفع الیدین سبکی ص 5)
54۔
وَ عَنْہُ عَنِ النَّبِیِّ ﷺ کَانَ یَرْفَعُ یَدَیْہِ عِنْدَ الرُّکُوْعِ وَاِذَا رَفَعَ رَاسَہٗ
سیدنا ابوموسیٰ رضی اللہ عنہ نے مجمع عام میں کہا آؤ میں تم کو رسول اللہ ﷺ کی طرح نماز پڑھ کر دکھاؤں۔ پھر اللہ اکبر کہہ کر نماز شروع کی جب رکوع کے لئے تکبیر کہی تو دونوں ہاتھ اٹھائے پھر جب سمع اﷲ لمن حمدہ کہا تو دونوں ہاتھ اٹھائے اور فرمایا لوگو! تم بھی اسی طرح نماز پڑھا کرو کیونکہ رسول اللہ ﷺ ہمیشہ رکوع میں جانے اور سر اٹھانے کے وقت رفع الیدین کیا کرتے تھے۔ (دارمی۔ دارقطنی ص 109، تلخیص الجیر ص81 جز امام بخاری ص 13، بیہقی جلد 2 ص 74)
55۔
اس حدیث میں بھی (کَانَ یَرْفَعُ) موجود ہے جو دوام کے لئے ہے۔
56۔
مولانا انور شاہ صاحب فرماتے ہیں (ھِیَ صَحِیْحَۃٌ) یہی حدیث صحیح ہے۔ (العرف الشذی ص125)
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدنا ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ

57۔
عَنْ اَبِیْ ھُرَیْرَۃَ اَنَّہٗ قَالَ کَانَ رَسُوْلُ اﷲِ ﷺ اِذَا کَبَّرَ لِلصَّلوٰۃِ جَعَلَ یَدْیْہِ حَذْ وَ مَنْکِبَیْہِ وَ اِذَا رَکَعَ فَعَلَ مِثْلَ ذٰلِکَ وَاِذَا رَفَعَ لِلسُّجُوْدِ فَعَلَ مِثْلَ ذٰلِکَ وَاِذَا قَامَ مِنَ الرَّکْعَتَیْنِ فَعَلَ مِثْلَ ذٰلِکَ (رَوَاہَ اَبُو دَاؤد)
58۔
وَ عَنْہُ عَنِ النَّبِیِّ ﷺ کَانَ یَرْفَعُ یَدَیْہِ عِنْدَ الرُّکُوْعِ وَاِذَا رَفَعَ رَأسَہٗ
سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ جب بھی نماز کے لئے اللہ اکبر کہتے تو اپنے ہاتھ کندھوں تک اٹھاتے اور اسی طرح جب رکوع میں جاتے اور رکوع سے سر اٹھاتے تو ہمیشہ کندھوں تک ہاتھ اٹھایا کرتے تھے۔(ابوداؤد جلد 1 ص 197، بیہقی جلد 2 ص 74، تلخیص الجیر ص 82، جز ء بخاری ص 13، جزء سکی ص 4)
اس میں بھی (کَانَ یَرْفَعُ) صیغہ استمرار موجود ہے۔
59۔
وَرِجَالُہٗ رِجَالُ صَحیح (تلخیص ص 82)
 
شمولیت
فروری 14، 2011
پیغامات
9,405
ری ایکشن اسکور
26,350
پوائنٹ
995
سیدناعبید بن عمیر رضی اللہ عنہ کی شہادت(گواہی)

60۔
عَنْ عُبَیْدِ ابْنِ عُمَیْرٍ عَنْ اَبِیْہِ عَنِ النَّبِیِّ ﷺ کَانَ یَرْفَعُ یَدَیْہِ عِنْدَ الرُّکُوْعِ وَاِذَا رَفَعَ رَاْسَہٗ (جزء بخاری ص 3)
سیدنا عبید بن عمیر اپنے باپ سے روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ ہمیشہ رکوع میں جاتے اور اٹھتے وقت رفع الیدین کیا کرتے تھے۔
61۔
اس حدیث میں بھی (کَانَ یَرْفَعُ) صیغہ استمرار موجود ہے جو دوام پر دلالت کرتا ہے۔
 
سٹیٹس
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
Top