• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

سب مسلمان بھائی متوجہ ہو

محمد ارسلان

خاص رکن
شمولیت
مارچ 09، 2011
پیغامات
17,865
ری ایکشن اسکور
41,088
پوائنٹ
1,155
آپ تمام ” فرقوں “ کو ” قرآن “ کی ” کسوٹی “ پر ” پرکھ “ کر دیکھیں جو ” فرقہ “ آپ کو ” قرآن “ کے مطابق لگے اسے اپنا لیں اور باقی کو ” نظر انداز “ کر دیں۔
آپ بجائے فرقہ بازی کو ختم کرنے کہ مزید بڑھاوا دے رہے ہیں، صرف قرآن مجید کو حجت قرار دینا اور احادیث کو یکسر نظر انداز کرنا اور احادیث کا نام تک نہ لینا بذات خود ایک نئے فرقے کو جنم دینا ہے۔ اور یہ فرقہ بھی گمراہی کی راہیں ہموار کرنے میں کسی طرح اہل شرک و بدعت سے پیچھے نہیں، بلکہ اس فرقے نے تو جس قدر مضحکہ خیز تاویلات کیں ہیں اور ذخیرہ احادیث کا انکار کیا ہے شاید کسی اور نے ایسا کیا ہو، میرے بھائی اگر صحیح معنوں میں مسلمان ہو اور اللہ اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم پر ایمان لانے کا دعویٰ آپ کا سچا ہے تو قرآن کے ساتھ ذخیرہ احادیث جو اسناد کے لحاظ سے صحیح اور قابل حجت ہیں ان کا تذکرہ کرنا مت بھولو، ورنہ آپ کا معاملہ بھی دھات کے تین پات والا ہی رہے گا۔ آپ کا اوپر والا جملہ یوں ہونا چاہئے:
آپ تمام ” فرقوں “ کو قرآن و حدیث کی ” کسوٹی “ پر ” پرکھ “ کر دیکھیں جو ” فرقہ “ آپ کو قرآن و حدیث کے مطابق لگے اسے اپنا لیں اور باقی کو ” نظر انداز “ کر دیں۔
 

ضدی

رکن
شمولیت
اگست 23، 2013
پیغامات
291
ری ایکشن اسکور
275
پوائنٹ
76
السلام علیکم۔

میرے خیال سے ہمارے دوست نے اگر قرآن کی طرف اشارہ کیا ہے تو غالب گمان یہ ہی ہے ان کی نیت درست ہو باقی دلوں کا حال اللہ بہتر جاننے والا ہے کیونکہ قرآن میں یہ سب باتیں پہلے سے موجود ہیں۔

وَالْمُؤْمِنُوْنَ وَالْمُؤْمِنٰتُ بَعْضُهُمْ اَوْلِيَاۗءُ بَعْضٍ ۘ يَاْمُرُوْنَ بِالْمَعْرُوْفِ وَيَنْهَوْنَ عَنِ الْمُنْكَرِ وَيُقِيْمُوْنَ الصَّلٰوةَ وَيُؤْتُوْنَ الزَّكٰوةَ وَيُطِيْعُوْنَ اللّٰهَ وَرَسُوْلَهٗ ۭ اُولٰۗىِٕكَ سَيَرْحَمُهُمُ اللّٰهُ ۭاِنَّ اللّٰهَ عَزِيْزٌ حَكِيْمٌ

مومن مرد و عورت آپس میں ایک دوسرے کے مددگار و معاون اور دوست ہیں وہ بھلائی کا حکم دیتے ہیں اور برائیوں سے روکتے ہیں نمازوں کی پابندی بجا لاتے ہیں زکٰو ۃ ادا کرتے ہیں اللہ کی اور اس کے رسول کی بات مانتے ہیں یہی لوگ ہیں جن پر اللہ تعالیٰ بہت جلد رحم فرمائے گا بیشک اللہ غلبے والا حکمت والا ہے۔

وَاَقِيْمُوا الصَّلٰوةَ وَاٰتُوا الزَّكٰوةَ وَاَطِيْعُوا الرَّسُوْلَ لَعَلَّكُمْ تُرْحَمُوْنَ
نماز کی پابندی کرو زکوۃ ادا کرو اور اللہ تعالیٰ کے رسول کی فرماں برداری میں لگے رہو تاکہ تم پر رحم کیا جائے

يٰٓاَيُّهَا الَّذِيْنَ اٰمَنُوْٓا اَطِيْعُوا اللّٰهَ وَاَطِيْعُوا الرَّسُوْلَ وَلَا تُبْطِلُوْٓا اَعْمَالَكُمْ
اے ایمان والو! اللہ کی اطاعت کرو اور رسول کا کہا مانو اور اپنے اعمال کو غارت نہ کرو۔

قُلْ اَطِيْعُوا اللّٰهَ وَالرَّسُوْلَ ۚ فَاِنْ تَوَلَّوْا فَاِنَّ اللّٰهَ لَا يُحِبُّ الْكٰفِرِيْنَ
کہہ دیجئے! کہ اللہ تعالیٰ اور رسول کی اطاعت کرو، اگر یہ منہ پھیر لیں تو بیشک اللہ تعالیٰ کافروں سے محبت نہیں کرتا

وَاَطِيْعُوا اللّٰهَ وَالرَّسُوْلَ لَعَلَّكُمْ تُرْحَمُوْنَ
اور اللہ اور اس کے رسول کی فرمانبرداری کرو تاکہ تم پر رحم کیا جائے۔

تِلْكَ حُدُوْدُ اللّٰهِ ۭ وَمَنْ يُّطِعِ اللّٰهَ وَرَسُوْلَهٗ يُدْخِلْهُ جَنّٰتٍ تَجْرِيْ مِنْ تَحْتِھَا الْاَنْھٰرُ خٰلِدِيْنَ فِيْھَا ۭ وَذٰلِكَ الْفَوْزُ الْعَظِيْمُ
یہ حدیں اللہ تعالیٰ کی مقرر کی ہوئی ہیں اور جو اللہ تعالیٰ کی اور اس کے رسول (صلی اللہ علیہ وسلم) کی فرمانبرداری کرے گا اسے اللہ تعالیٰ جنتوں میں لے جائے گا جن کے نیچے نہریں بہہ رہی ہیں جن میں وہ ہمیشہ رہیں گے اور یہ بہت بڑی کامیابی ہے۔

يٰٓاَيُّھَا الَّذِيْنَ اٰمَنُوْٓا اَطِيْعُوا اللّٰهَ وَاَطِيْعُوا الرَّسُوْلَ وَاُولِي الْاَمْرِ مِنْكُمْ ۚ فَاِنْ تَنَازَعْتُمْ فِيْ شَيْءٍ فَرُدُّوْهُ اِلَى اللّٰهِ وَالرَّسُوْلِ اِنْ كُنْتُمْ تُؤْمِنُوْنَ بِاللّٰهِ وَالْيَوْمِ الْاٰخِرِ ۭ ذٰلِكَ خَيْرٌ وَّاَحْسَنُ تَاْوِيْلًا
اے ایمان والو! فرمانبرداری کرو اللہ تعالیٰ کی اور فرمانبرداری کرو (رسول اللہ علیہ و سلم) کی اور تم میں سے اختیار والوں کی۔ پھر اگر کسی چیز پر اختلاف کرو تو اسے لوٹاؤ، اللہ تعالیٰ کی طرف اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف، اگر تمہیں اللہ تعالیٰ پر اور قیامت کے دن پر ایمان ہے یہ بہت بہتر ہے اور باعتبار انجام کے بہت اچھا ہے۔

وَمَنْ يُّطِعِ اللّٰهَ وَالرَّسُوْلَ فَاُولٰۗىِٕكَ مَعَ الَّذِيْنَ اَنْعَمَ اللّٰهُ عَلَيْهِمْ مِّنَ النَّبِيّٖنَ وَالصِّدِّيْقِيْنَ وَالشُّهَدَاۗءِ وَالصّٰلِحِيْنَ ۚ وَحَسُنَ اُولٰۗىِٕكَ رَفِيْقًا
اور جو بھی اللہ تعالیٰ کی اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی فرمانبرداری کرے، وہ ان لوگوں کے ساتھ ہوگا جن پر اللہ تعالیٰ نے انعام کیا، جیسے نبی اور صدیق اور شہید اور نیک لوگ، یہ بہترین رفیق ہیں۔

مَنْ يُّطِعِ الرَّسُوْلَ فَقَدْ اَطَاعَ اللّٰهَ ۚ وَمَنْ تَوَلّٰى فَمَآ اَرْسَلْنٰكَ عَلَيْهِمْ حَفِيْظًا
اس رسول (صلی اللہ علیہ وسلم) کی جو اطاعت کرے اسی نے اللہ تعالیٰ کی فرمانبرداری کی اور جو منہ پھیر لے تو ہم نے آپ کو کچھ ان پر نگہبان بنا کر نہیں بھیجا۔

يٰٓاَيُّھَا الَّذِيْنَ اٰمَنُوْٓا اَطِيْعُوا اللّٰهَ وَرَسُوْلَهٗ وَلَا تَوَلَّوْا عَنْهُ وَاَنْتُمْ تَسْمَعُوْنَ
اے ایمان والو! اللہ کا اور اس کے رسول کا کہنا مانو اور اس (کا کہنا ماننے) سے روگردانی مت کرو سنتے جانتے ہوئے۔

وَاَطِيْعُوا اللّٰهَ وَرَسُوْلَهٗ وَلَا تَنَازَعُوْا فَتَفْشَلُوْا وَتَذْهَبَ رِيْحُكُمْ وَاصْبِرُوْا ۭ اِنَّ اللّٰهَ مَعَ الصّٰبِرِيْنَ
اور اللہ کی اور اس کے رسول کی فرماں برداری کرتے رہو، آپس میں اختلاف نہ کرو ورنہ بزدل ہو جاؤ گے اور تمہاری ہوا اکھڑ جائے گی اور صبر و سہار رکھو یقیناً اللہ تعالیٰ صبر کرنے والوں کے ساتھ ہے

وَمَنْ يُّطِعِ اللّٰهَ وَرَسُوْلَهٗ وَيَخْشَ اللّٰهَ وَيَتَّقْهِ فَاُولٰۗىِٕكَ هُمُ الْفَاۗىِٕزُوْنَ
جو بھی اللہ تعالیٰ کی، اس کے رسول کی فرماں برداری کریں، خوف الٰہی رکھیں اور اس کے عذابوں سے ڈرتے رہیں، وہی نجات پانے والے ہیں

قُلْ اَطِيْعُوا اللّٰهَ وَاَطِيْعُوا الرَّسُوْلَ ۚ فَاِنْ تَوَلَّوْا فَاِنَّمَا عَلَيْهِ مَا حُمِّلَ وَعَلَيْكُمْ مَّا حُمِّلْتُمْ ۭ وَاِنْ تُطِيْعُوْهُ تَهْتَدُوْا ۭ وَمَا عَلَي الرَّسُوْلِ اِلَّا الْبَلٰغُ الْمُبِيْنُ
کہہ دیجئے کہ اللہ کا حکم مانو، رسول اللہ کی اطاعت کرو، پھر بھی اگر تم نے روگردانی کی تو رسول کے ذمے تو صرف وہی ہے جو اس پر لازم کر دیا گیا ہے اور تم پر اس کی جوابدہی ہے جو تم پر رکھا گیا ہے ہدایت تو تمہیں اس وقت ملے گی جب رسول کی ماتحتی کرو سنو رسول کے ذمے تو صرف صاف طور پر پہنچا دینا ہے۔

وَاَطِيْعُوا اللّٰهَ وَاَطِيْعُوا الرَّسُوْلَ ۚ فَاِنْ تَوَلَّيْتُمْ فَاِنَّمَا عَلٰي رَسُوْلِنَا الْبَلٰغُ الْمُبِيْنُ
لوگو) اللہ کا کہنا مانو اور رسول کا کہنا مانو۔ پس اگر تم اعراض کرو تو ہمارے رسول کے ذمے صرف صاف صاف پہنچا دینا ہے


اِنَّ اللّٰهَ وَمَلٰۗىِٕكَتَهٗ يُصَلُّوْنَ عَلَي النَّبِيِّ ۭ يٰٓاَيُّهَا الَّذِيْنَ اٰمَنُوْا صَلُّوْا عَلَيْهِ وَسَلِّمُوْا تَسْلِــيْمًا
اللہ تعالیٰ اور اس کے فرشتے اس نبی پر رحمت بھیجتے ہیں۔ اے ایمان والو! تم (بھی) ان پر درود بھیجو اور خوب سلام (بھی) بھیجتے رہا کرو

لَقَدْ كَانَ لَكُمْ فِيْ رَسُوْلِ اللّٰهِ اُسْوَةٌ حَسَنَةٌ لِّمَنْ كَانَ يَرْجُوا اللّٰهَ وَالْيَوْمَ الْاٰخِرَ وَذَكَرَ اللّٰهَ كَثِيْرًا
یقیناً تمہارے لئے رسول اللہ میں عمدہ نمونہ (موجود) ہے ہر اس شخص کے لئے جو اللہ تعالیٰ کی قیامت کے دن کی توقع رکھتا ہے اور بکثرت اللہ تعالیٰ کی یاد کرتا ہے

مُّحَمَّدٌ رَّسُولُ اللَّـهِ ۚ وَالَّذِينَ مَعَهُ أَشِدَّاءُ عَلَى الْكُفَّارِ رُحَمَاءُ بَيْنَهُمْ ۖتَرَاهُمْ رُكَّعًا سُجَّدًا يَبْتَغُونَ فَضْلًا مِّنَ اللَّـهِ وَرِضْوَانًا ۖ
محمد (صلی اللہ علیہ وسلم) اللہ کے رسول ہیں اور جو لوگ ان کے ساتھ کافروں پر سخت ہیں آپس میں رحمدل ہیں، تو انہیں دیکھے گا کہ رکوع اور سجدے کر رہے ہیں اللہ تعالیٰ کے فضل اور رضامندی کی جستجو میں ہیں،

واللہ اعلم۔
 

ضدی

رکن
شمولیت
اگست 23، 2013
پیغامات
291
ری ایکشن اسکور
275
پوائنٹ
76
جب ایمان کا پانا انتہائی دشوار ہوجائے تو ایسے وقت مین اہل فارس کی طرف رجوع کرنا چاہئے کیوں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ارشاد کے مطابق اگر ایمان اوج ثریا پر بھی ہوگا تو اہل فارس اس کو پالیں گے
یہ حدیث صحیح بخاری میں بیان ہوئی
تو دجال کہاں سے نکلے گا اور اس کے ساتھ ستر ہزار کا لشکر جس میں یہودی ہونگے، اس کی بھی رہنمائی فرمادیں، احادیث میں بہت کچھ ہے لیکن اپنی اپنی ڈفلی اپنا اپنا راگ مقصد نہیں ہونا چاہئے۔

دوسری بات شیعہ کو فرقہ سمجھنا جہالت ہے فرقہ تو وہ ہوگا جو نبیٖﷺ کے لائے ہوئے دین میں بدعات کو جاری کرے لیکن بدعتی کا عقیدہ خلفائے راشدین کے تعلق سے وہ نہیں جو شیعہ مذہب کے ماننے والوں کا ہے اگر شیعہ فرقہ ہوتا تو سحر اور افطار کے اوقات میں فرق کیوں ہوتا؟۔ شیعہ مذہب دراصل ایک نیا دین ہے جس کا امام عبداللہ بن سبا تھے پھر بعد میں یہ امامت خواہشات کی منڈیر پر بیٹھ گئی اس کوے کی طرح جو مسجد کی منڈیر پر بیٹھ کر خود امام سمجھنے لگتا ہے۔
 
Last edited:

عبدہ

سینئر رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
نومبر 01، 2013
پیغامات
2,038
ری ایکشن اسکور
1,223
پوائنٹ
425
1-میرا سوال
میں نے لکھا تھا کہ
اہل حدیث، بریلوی اور دیوبندی سب کے لئے قابل قبول نظریہ
بے شک دو انسانوں کا اللہ بھی ایک ہو پیغمبر بھی ایک ہو، کلمہ بھی ایک ہو دین بھی ایک ہو اور اسلام بھی ایک ہو مگر پھر بھی ان میں سے ایک کافر یا گمراہ یا مشرک ہو سکتا ہے اور دوسرا مسلمان ہو سکتا ہے
بھائی @aziz khan سے گزارش ہے کہ اس متفقہ نظریہ پر کوئی اعتراض ہو تو بتائیں تاکہ آگے بات جاری رہ سکے
2-عزیز خان کا جواب
اس پر بھائی @aziz khan نے اس نظریہ کو قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ
آپ کا اوپر لکھا ھوا نظریہ جو دوبارہ کوٹ بھی کیا ہے وہ واقعی متفقہ ھے لو اور بتاؤ محترم عبد ہ بھائی
3-عزیز خان کا اصل سوال
اب بھائی عزیز خان کے اس سوال کی طرف آتے ہیں جس کی وجہ سے یہ موضوع انہوں نے شروع کیا تھا انکا سوال تھا کہ
کوئی بھائی مجھے بتائیں کہ ھم مسلمان؛ کیوں فرقے بازی میں لگے ہوئے ہیں جب ھم سب کا اللہ ایک ہے قرآن مجید ایک پیغمبر ایک اسلام ایک کلمہ ایک دین ایک ھے پھر ھم کیوں فرقوں و میں ںبٹے ہوئے ہیں بریلوی کہتے ہیں اہلحدیث کفر ھے اہلحدیث کہتے ہیں دیوبندی کافر ہیں اخیر کیوں کیا ھم َ سب ایک نہیں ھو سکتے اور وہ کون ھے جو ھم سب کو ایک ھو نے نہیں دیتا؟
4-عزیز خان کے اصل سوال کا جواب
بھائی عزیز خان آپ نے اوپر خود ہی جو نظریہ قبول کیا ہوا ہے اس میں کہا گیا ہے کہ بے شک دو انسانوں کا اللہ بھی ایک ہو پیغمبر بھی ایک ہو، کلمہ بھی ایک ہو دین بھی ایک ہو اور اسلام بھی ایک ہو مگر پھر بھی ان میں سے ایک کافر یا گمراہ یا مشرک ہو سکتا ہے اور دوسرا مسلمان ہو سکتا ہے
اب آپ کے اوپر سوال کا جواب تو آپ نے خود ہی ایک نظریہ قبول کر کے دے دیا ہے تو ہم اس بارے میں کیا کہ سکتے ہیں

5-مزید اشکال
اھم بات یہ ھے کے اگر ھم کیسی کو اسلام کہ دعوت دی تو وہ آگے سے یہ بولے کہ ٹھیک ہے میں مسلمان ھو تا ھوں پر میں کونسا اسلام قبول کروں بریلوی اہلحدیث یا دیوبند میں کیا جواب دوں اوسکو :
بھائی اگر کوئی یورپ میں اسلام قبول کر رہا ہو اور وہ پہلے آپ سے بولے کہ میں مسلمان ہوتا ہوں پر میں کونسا اسلام قبول کروں مرزائی کا یا لاہوری گروپ کا یا پھر سنی مسلمانوں کا یا شیعہ مسلمانوں کا تو آپ اسکو جو جواب دیں گے وہی جواب اوپر اشکال کے وقت بھی دے دیں جزاک اللہ خیرا
 
Top