• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

داعش کا حقيقی چہرہ

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

داعش
نے افغانستان ميں 12 سکول تباہ کر ديے۔

عوام کی تعليم اور شعور تک رسائ سے خائف داعش، درسگاہوں اور
سکولوں کو نشانہ بنا رہی ہے۔
 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,777
ری ایکشن اسکور
8,421
پوائنٹ
964
دور کیا جانا ہے ، فورم پر امریکی ترجمان بھی موجود ہیں ، جبکہ اسی فورم پر داعشی فکر ترجمان بھی موجود ہیں ، کبھی کسی نے دیکھا ، دونوں ایک دوسرے سے کراس سوال کر رہے ہوں ؟
گویا اندر سے ایک ہی ہیں ، کہیں اصل ، کہیں بہروپ ، ہر دو طرح لوگوں کو دھوکہ دے رہے ہیں ۔
 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


خود کش حملوں کے ليے بوکو حرام کا ترجيحی ہتھيار – خواتين اور کم سن بچے

نۓ حقائق نے بوکوحرام کی سنگدلی کی انتہا بے نقاب کر دی

تازہ رپورٹ کے مطابق بوکوحرام بے گناہ شہريوں کے قتل عام اور خود کش حملوں کے ليے عورتوں اور بچوں کے استعمال کو ترجيح ديتی ہے۔ ويسٹ پوائنٹ اور يئل يونيورسٹی کے محققين کے مطابق سال 2011 سے اب تک 338 حملوں ميں سے 244 خواتين کے ذريعے کرواۓ گۓ۔



فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ




سکولوں، بازاروں، ہسپتالوں اور يہاں تک جنازوں جيسے عوامی مقامات پر بھی خونی حملوں کے بعد – داعش کے درندوں نے اب خوف اور بربريت پر مبنی اپنی مہم کو جاری رکھنے کے ليے کھيل کے ميدانوں کا رخ کر ليا ہے۔

ايک بار پھر يہ مجرم اپنے قبيح گناہوں پر پيشمان ہونے کی بجا‎ۓ،
واقعے کی ذمہ داری قبول کر رہے ہيں۔ ستم ظريفی يہ ہے کہ وہ اب بھی اس بات پر بضد ہيں کہ ان کا "مشن" عام افغان شہريوں کی بہتری کے ليے ہے۔

http://shahernama.com/isi-claimed-responsibility-for-the-kabul-stadium-attack/

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

داعش کے دہشت گردوں نے ميرے شوہر کو آگ ميں جھونک ديا"

انسانيت بدستور دہشت گردوں اور پرتشدد انتہا پسندوں کے جبر کا شکار ہے۔ افغانستان کے ضلع درزاب کے بے گھر شہری ان دہشت گردوں کے ہاتھوں ظلم سہنے کے بعد اپنی داستان سنا رہے ہيں۔





 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

عراق کے مختلف شہروں ميں عوامی مقامات سے داعش کے ظلم سے عبارت بے شمار نشانياں ہٹانے کا کٹھن کام شروع ہو چکا ہے۔ باوجود اس کے کہ داعش کے مجرموں نے عراقی عوام پر اپنے تسلط کو برقرار رکھنے کے ليے بربريت کی مثاليں قائم کر ديں، عراقی عوام کی جرات اور استقامت نے اس بات کو يقينی بنا ديا ہے کہ وہ اپنے طرز زندگی کو دوبارہ بحال کر ليں گے۔

کچھ عراقی شہريوں کے تاثرات جو اپنے قصبوں اور شہروں ميں واپس آ کر ازسرنو اپنی زندگی کے معمول بحال کرنے کے ليے پرعزم ہيں۔

 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ​


اطلاعات کے مطابق خالد علی کو داعشی عقوبت خانے سے اپنے خاندان والوں کو آزاد کرانے کیلۓ داعشی درندوں کو ہزاروں ڈالر بطور تاوان ادا کرنے پڑے

http://www.bbc.com/news/stories-43673840

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ​

 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,777
ری ایکشن اسکور
8,421
پوائنٹ
964
اطلاعات کے مطابق خالد علی کو داعشی عقوبت خانے سے اپنے خاندان والوں کو آزاد کرانے کیلۓ داعشی درندوں کو ہزاروں ڈالر بطور تاوان ادا کرنے پڑے
ذرا رحم دل درندے لگتے ہیں جو تاوان لے کر ہی لوگوں کو چھوڑ دیتے ہیں۔
امریکی درندے پتہ نہیں کب مظلوموں کو چھوڑیں گے۔
ایک کمزور اور ناتواں خاتون عافیہ صدیقی چھوڑنے کے لیے امریکی درندوں کو کتنا تاوان کافی ہوگا؟
 

فواد

رکن
شمولیت
دسمبر 28، 2011
پیغامات
434
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
74
ذرا رحم دل درندے لگتے ہیں جو تاوان لے کر ہی لوگوں کو چھوڑ دیتے ہیں۔
امریکی درندے پتہ نہیں کب مظلوموں کو چھوڑیں گے۔
ایک کمزور اور ناتواں خاتون عافیہ صدیقی چھوڑنے کے لیے امریکی درندوں کو کتنا تاوان کافی ہوگا؟


فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

سب سے پہلے تو يہ واضح کر دوں کہ دانستہ عام شہريوں کو اغوا کرنے اور پھر تاوان کے حصول کے ليے انھيں تشدد کا نشانہ بنانا ايسا عمل نہيں ہے جس کا تقابل اس حکمت عملی سے کيا جاۓ جس کا واحد مقصد دہشت گرد کاروائيوں سے عام شہريوں کو محفوظ کرنے کے ليے "اينمی کمبيٹنٹ" کو زير حراست رکھنا تھا۔

علاوہ ازيں، ڈاکٹر عافيہ کيس کا تقابل کسی بھی طور داعش کی اغوا کی کاروائيوں سے نہيں کيا جا سکتا کيونکہ نہ تو انھيں اغوا کيا گيا ہے، نا وہ جنگی قيدی ہيں اور نہ ہی يرغمال۔ اس کے علاوہ انھيں کسی فوجی عدالت ميں پيش نہيں کيا گيا۔ ان کے خلاف مقدمہ ايک عوامی عدالت ميں چلايا گيا اور انھيں وہ تمام حقوق فراہم کيے گۓ جو کسی بھی سول عدالت ميں
پيش ہونے والے ملزم کو حاصل ہوتے ہيں۔

جہاں تک ابوغريب اور گوانتاناموبے ميں بدسلوکی کے حوالے سے رپورٹ کيے جانے والے چند واقعات کا تعلق ہے تو اس ضمن ميں واضح رہے کہ امريکی حکومت کی جانب سے نا تو ان واقعات کی پشت پنائ کی گئ، نا ہی ان واقعات ميں ملوث افراد کی حمايت کی گئ اور نا ہی ان واقعات پر پردہ ڈالنے کی کوئ کوشش کی گئ۔ رپورٹ ہونے والے ہر واقعے کی جامع تحقيق کی گئ اور ہر ذمہ دار شخص کو اپنے کيے کی سزا دی گئ۔

کيا آپ داعش کی قيادت کی جانب سے يہ توقع رکھ سکتے ہيں کہ وہ اپنی خون ريزی اور قيديوں پے ڈھاۓ جانے والے مظالم کے حوالے سے کسی بھی قسم کی تاديبی کاروائ کريں گے؟ يہ جانتے ہوۓ کہ داعش کی جانب سے يہ مظالم دانستہ ايک طے شدہ حکمت عملی کے مطابق کيے جاتے ہيں جس کا مقصد خوف اور تشدد کی تشہير ہے۔

آئ ايس آئ ايس کے مجرموں اور دہشت گردوں کی جانب سے بے رحمی، بربريت اور انسانيت کی تذليل پر مبنی تصاوير اور ويڈيوز کی تشہير اور پھر ان پر ڈھٹائ کے ساتھ فخر کرنا کوئ نئ بات نہيں ہے۔ تاہم ان غير انسانی اعمال کی ذمہ داری قبول کرنے سے ان کی خود ساختہ بہادری اور عظمت کے دعوؤں کی حقيقت سب پر ضرور عياں ہو جاتی ہے۔

۔دہشت گرد گروہ تواتر کے ساتھ يہ دعوی کرتے ہيں کہ وہ امريکی جارحيت اور مسلم امہ کے خلاف مغربی يلغار کے نتيجے ميں دفاع کے ليے ميدان عمل ميں اترے ہيں۔ ليکن اگر آپ ان کی تشہيری ويڈيوز اور ديگری مواد ميں موجود قيديوں کے نقوش اور ان کے کوائف پر نظر ڈاليں تو يہ واضح ہو جاتا ہے کہ مسلمان اور وہ آبادياں جن کو تحفظ فراہم کرنے کا دعوی ان تنظيموں کی جانب سے کيا جاتا ہے، وہی سب سے زيادہ ان کے عتاب کا شکار ہوتی ہيں۔

ستم ظريفی ديکھيں کہ يہ دہشت گرد گروہ اس بات کا دعوی کرتے ہیں کہ يہ اسلام کے اصولوں پر کاربند ہيں جو قيديوں سے سلوک کے حوالے سے سخت حدود کا تعين کرتا ہے، تاہم آئ ايس آئ ايس کے دہشت گرد اپنے قيديوں کو اجتماعی قتل کرنے اور انھيں تشدد کا نشانہ بنانے ميں کبھی بھی ہچکچاہٹ کا مظاہرہ نہيں کرتے۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

http://www.facebook.com/USDOTUrdu

https://www.instagram.com/doturdu/

https://www.flickr.com/photos/usdoturdu/
 
Top