• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

دجال کے پاس مارنے کے بعد زندہ کرنے کی قوت ہوگی؟

شمولیت
ستمبر 21، 2015
پیغامات
2,626
ری ایکشن اسکور
739
پوائنٹ
290
"آج ﯾﮩﻮﺩ ، ﻧﺼﺮﺍﻧﯿﻮﮞ ﺍﻭﺭ ﻣﺴﻠﻤﺎﻧﻮﮞ ﺗﯿﻨﻮﮞ ﻣﺪﮬﺐ ﺍﭘﻨﮯ ﺍﭖ ﮐﻮ ﺍﺑﺮﺍﮬﯿﻢ ﻋﻠﯿﮧ ﺍﻟﺴﻼ‌ﻡ ﺳﮯ ﺟﻮﮌﺗﮯ ﮨﯿﮟ –"

مجهے یہ بات سمجهائیں کہ آپ کے لکهے هوئے مندرجہ بالا فقرہ میں "آج" سے آپ کا کیا مطلب هے ؟
 

محمد علی جواد

سینئر رکن
شمولیت
جولائی 18، 2012
پیغامات
1,988
ری ایکشن اسکور
1,527
پوائنٹ
304
لیکن یہ آپ کی رائے ہے – یہ کیسے معلوم ہو گا کہ حدیث نبوی میں یہ لوگ مراد تھے؟
محترم -

رائے نہیں یہ حقیقت ہے -کیا دور حاضر میں گمراہ حکام کے ساتھ ساتھ گمراہ آئمہ (علماء) بھی امّت کے لئے فتنہ نہیں ہیں؟؟ کیا ان کے متعلق حدیث میں کوئی پیشنگوئی موجود نہیں؟؟-
 
شمولیت
جون 11، 2015
پیغامات
401
ری ایکشن اسکور
13
پوائنٹ
79
السلام علیکم ورحمۃاللہ وبرکاتہ!
یہاں آپ نے اپنا مدعا بیان نہیں کیا کہ مدعا کیا ہے!
جی بالکل ان مردوں نے اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی بات سنی تھی!
یہ بات اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمائی ہے! جس طرح اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے فرمان کی بنا پر ہم قرآن کومنزل من اللہ مانتے ہیں اسی طرح ہم اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی یہ بات بھی مانتے ہیں!
اسلام علیکم! میرا یہاں بات کرنے کا مقصد ،مدعا یہ ہے کہ آپ کو بھی غلطی لگی ہے ، آپ نے تحقیق نہیں کی بلکہ جو کچھ آپ کو پڑھا دیا گیا بس وہی سب درست ہے۔۔دیکھیں اس حدیث کو اور غور کریں۔۔۔۔اس میں حدیث سے واضح ہے انہوں نے نہیں سنا لیکن نیچے تشریح کرنے والے نے اپنے عقیدہ کے لحاظ سے تشریح کر دی ۔۔۔۔کیا یہ ظلم نہیں ۔۔۔۔کہاں کا عقیدہ ہے کہ احادیث کو سامنے رکھ کر اپنے اپنے عقیدہ کا نکالا جائے۔۔۔۔
دجال کے بارے میں بھی یہی مسلہ ہے جو کسی نے جو کچھ پڑھا دیا بس وہی کچھ حق ہے ۔۔۔قرآن مجید پر کس نے غور کرنا ۔۔۔۔؟
 

اٹیچمنٹس

  • 2.8 MB مناظر: 117

ابن داود

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
نومبر 08، 2011
پیغامات
3,366
ری ایکشن اسکور
2,669
پوائنٹ
556
السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
اسلام علیکم! میرا یہاں بات کرنے کا مقصد ،مدعا یہ ہے کہ آپ کو بھی غلطی لگی ہے ،
نہیں آپ کو اپنا مدعا بیان کرنے میں غلطی لگ رہی ہے!
آپ نے جو صفحہ پیش کیا تھا، وہاں تو غور سے دیکھیں، اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے کیا فرمایا ہے؛

آپ نے تحقیق نہیں کی بلکہ جو کچھ آپ کو پڑھا دیا گیا بس وہی سب درست ہے۔۔
میرے بھائی! اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی پر نازل شدہ وحی کا انکار تحقیق نہیں کفر کہلاتاہے، اور وہ اللہ کی توفیق سے ہم نہیں کرتے!
دیکھیں اس حدیث کو اور غور کریں۔۔۔۔اس میں حدیث سے واضح ہے انہوں نے نہیں سنا
آپ کی آنکھوں پر موتیا آگیا ہے! آپ اپنے ہی پیش کردہ صفحہ کو انکار حدیث کے کفر کا چشمہ اتار کر دیکھیں! وہاں واضح لکھا ہے:
اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایاٌ اس ذات کی قسم جس کے ہاتھ میں میری جان ہے، جو کچھ میں کہہ رہا ہوں تم کوگ ان سے زیادہ نہیں سن رہے ہو۔
لیکن نیچے تشریح کرنے والے نے اپنے عقیدہ کے لحاظ سے تشریح کر دی ۔۔۔۔کیا یہ ظلم نہیں ۔۔۔۔
نہیں! یہ تشریح ایک توضیح ہوتی ہے!
کہاں کا عقیدہ ہے کہ احادیث کو سامنے رکھ کر اپنے اپنے عقیدہ کا نکالا جائے۔۔۔۔
احادیث کو سامنے رکھ کر عقیدہ نکالنا یعنی اخذ کرنا، دین اسلام کا عقیدہ ہے! اور جو اس کا انکار کرتا ہے، وہ کفر کرتا ہے!
دجال کے بارے میں بھی یہی مسلہ ہے جو کسی نے جو کچھ پڑھا دیا بس وہی کچھ حق ہے ۔۔۔قرآن مجید پر کس نے غور کرنا ۔۔۔۔؟
احادیث کو چھوڑ کر اپنی اٹکل سے قرآن پر غور کرنے والوں کو قرآن تو سمجھ نہیں آتا، لیکن وہ اپنے اٹکل پچو کو قرآن باور کروانے پر تلے ہوتے ہیں!
 
Last edited:
شمولیت
دسمبر 27، 2018
پیغامات
1
ری ایکشن اسکور
0
پوائنٹ
5
اسحاق سلفی صاحب۔
آپ نے جواب دیا۔
دجال مردوں کو اپنی ذاتی قدرت سے تو زندہ نہیں کرے گا ، اسے شعبدہ کا فن اللہ نے لوگوں کی آزمائش و امتحان کیلئے دیا ہوگا (استغفراللہ) ۔
-------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------
(سورۃ البقرہ2آیت80۔
تم اللہ کے ذمے ڈال کر ایسی باتیں کہہ دیتے ہو جن کے متعلق تمہیں علم نہیں ہے کہ اس نے ان کا ذمہ لیا ہے؟۔۔۔۔)
سورۃ البقرہ 2آیت 169۔"شیطان تمہیں بدی اور فحش کا حکم دیتا ہے اور یہ سکھاتا ہے کہ تم اللہ کے نام پر وہ باتیں کہو جن کے متعلق تمہیں علم نہیں ہے کہ وہ اللہ نے فرمائی ہیں۔"
 
Top