• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

عالمِ حیاتیات کے دلچسپ حقائق!

ماریہ انعام

مشہور رکن
شمولیت
نومبر 12، 2013
پیغامات
498
ری ایکشن اسکور
372
پوائنٹ
164
السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
تمام دیگر جانداروں کی طرح اللہ تعالی نے حضرتِ انسان کی بھی عموماً دو اصناف تخلیق کی ہیں۔۔۔مرد و زن ۔۔۔۔ان دونوں کی حیاتیاتی تشکیل میں روزِ اؤل سے ہی ایک نمایاں اور واضح فرق موجود ہوتا ہے ۔۔۔۔حقوقِ نسواں کے علمبرداروں اورمرد و زن کی مسابقت کے دعویداروں کے لیے اس سچے واقعہ میں نصیحت کا وافر سامان ہے۔۔
امریکی ریاست کے ہسپتال میں ایک دفعہ ایسا اتفاق ہوا کہ بیک وقت دو بچوں کی پیدائش ہوئی اور افراتفری میں دونوں کے ہاتھوں میں ماؤں سے نسبت ظاہر کرنے والا ٹیگ نہ لگایا جاسکا۔۔۔ان بچوں میں ایک لڑکا تھا اور دوسری لڑکی۔۔۔۔ٹیگ نہ لگانے کی وجہ سے دونوں کی ماؤں کی تعیین میں مشکل پیش آنے لگی۔۔۔جب دونوں بچوں کی فیملز کو اس صورتحال کا اندازہ ہوا تو ان کے غم و غصہ کی انتہاء نہ رہی اور انھوں نے ہسپتال والوں کو کیس کی دھمکی دی۔۔۔اس ہسپتال میں ایک مسلمان ڈاکٹر بھی تعینات تھا ۔۔۔عیسائی ڈاکٹر اس کے پاس آئے اور اسے کہا
تمہارا دعوی ہے کہ تمہاری الہامی کتاب میں ہر مسئلہ کا حل موجود ہے۔۔ اگر تم اپنے دعوے میں سچے ہو تو یہ مسئلہ اس کتاب کی روشنی میں حل کرو
مسلمان ڈاکٹر ایک عالم کے پاس جا پہنچا اور مذکورہ مسئلہ ان کے سامنے رکھا۔۔۔۔انھوں نے کہا کہ میں اس حوالے سے قرآن میں ایک ہی آیت پاتا ہوں

لِلذَّكَرِ مِثْلُ حَظِّ الْأُنثَيَيْنِ ۚ
ایک لڑکے کا حصہ دو لڑکیوں کے برابر ہے

اس ایک آیت نے سارا مسئلہ ہی حل کر دیا۔۔۔۔وہ یوں کہ اس آیت کو عالم صاحب نے عموم پر محمول کیا اور ثابت کیا کہ ایک لڑکے کی ماں کے دودھ کی غذائیت لڑکی کی ماں کے دودھ کی غذائیت سے دوگنی ہو گی اوران کے دودھ کا تجزیہ کرنے سے دونوں کی ماؤں کا تعین کیا جا سکے گا۔۔۔
چنانچہ ان کے مشورے پر عمل کیا گیا۔۔۔قرآنی آیت کی حقانیت ایک بار پھر ثابت ہوئی۔۔۔اور وہ حقیقت سامنے آئی جس سے ڈاکٹر بھی اب تک بے خبر تھے۔۔۔سبحان اللہ
 

ماریہ انعام

مشہور رکن
شمولیت
نومبر 12، 2013
پیغامات
498
ری ایکشن اسکور
372
پوائنٹ
164
عورت اور مرو کی جسمانی ساخت میں پایا جانے والا یہ فرق مرد کے قوام ہونے کی ایک وجہ بھی ہے

الرِّجَالُ قَوَّامُونَ عَلَى النِّسَاءِ بِمَا فَضَّلَ اللَّهُ بَعْضَهُمْ عَلَىٰ بَعْضٍ وَبِمَا أَنفَقُوا مِنْ أَمْوَالِهِمْ ۚ
مرد عورتوں پر حاکم ہیں اس وجہ سے کہ اللہ تعالیٰ نے ایک کو دوسرے پر فضیلت دی ہے اور اس وجہ سے کہ مردوں نے اپنے مال خرچ کئے ہیں
 

کنعان

فعال رکن
شمولیت
جون 29، 2011
پیغامات
3,564
ری ایکشن اسکور
4,420
پوائنٹ
521
کیا اس بارے میں کوئی شرعی دلیل موجود ہے کہ
جنوں اور انسانوں کے درمیان کسی اور مخلوق کو پیدا نہیں کیا گیا؟
بسم اللہ الرحمن الرحیم

وَمَا خَلَقْتُ الْجِنَّ وَالْإِنسَ إِلَّا لِيَعْبُدُونِ
51:56

وَلَقَدْ خَلَقْنَا الْإِنسَانَ مِن صَلْصَالٍ مِّنْ حَمَإٍ مَّسْنُونٍ
وَالْجَآنَّ خَلَقْنَاهُ مِن قَبْلُ مِن نَّارِ السَّمُومِ
15:26،27

وَكَذَلِكَ جَعَلْنَا لِكُلِّ نَبِيٍّ عَدُوًّا شَيَاطِينَ الْإِنسِ وَالْجِنِّ يُوحِي بَعْضُهُمْ إِلَى بَعْضٍ زُخْرُفَ الْقَوْلِ غُرُورًا وَلَوْ شَاءَ رَبُّكَ مَا فَعَلُوهُ فَذَرْهُمْ وَمَا يَفْتَرُونَ
6:112
 

حافظ عمران الہی

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 09، 2013
پیغامات
2,101
ری ایکشن اسکور
1,451
پوائنٹ
344
بسم اللہ الرحمن الرحیم

وَمَا خَلَقْتُ الْجِنَّ وَالْإِنسَ إِلَّا لِيَعْبُدُونِ
51:56

وَلَقَدْ خَلَقْنَا الْإِنسَانَ مِن صَلْصَالٍ مِّنْ حَمَإٍ مَّسْنُونٍ
وَالْجَآنَّ خَلَقْنَاهُ مِن قَبْلُ مِن نَّارِ السَّمُومِ
15:26،27

وَكَذَلِكَ جَعَلْنَا لِكُلِّ نَبِيٍّ عَدُوًّا شَيَاطِينَ الْإِنسِ وَالْجِنِّ يُوحِي بَعْضُهُمْ إِلَى بَعْضٍ زُخْرُفَ الْقَوْلِ غُرُورًا وَلَوْ شَاءَ رَبُّكَ مَا فَعَلُوهُ فَذَرْهُمْ وَمَا يَفْتَرُونَ
6:112
میرا مقصد یہ تھا کہ کیا جانور پرندے اور اس طرح کی دوسری مخلوقات کو کب پیدا کیا گیا تھا انسان سے پہلے یا بعد میں، کیا اس بارے کی کوئی حتمی دلیل ہے جس یہ پتہ چلے کہ انسان اور جنوں کے درمیان کسی اور مخلوق کو پیدا نہیں کیا گیا تھا؟
 

اخت ولید

سینئر رکن
شمولیت
اگست 26، 2013
پیغامات
1,792
ری ایکشن اسکور
1,290
پوائنٹ
326
نیند میں ہر شخص خواب ضرور دیکھتا ہے(اکثر ہوش میں بھی تسلی سے دیکھ لیتے ہیں:))۔۔یہ علیحدہ بات ہے کہ کچھ افراد خواب یاد نہیں رکھ پاتے جس کی وجہ ان کا blood glucose (بلڈ گلوکوز)کا لیول زیادہ ہونا ہے!
بشکریہ :ڈاکٹر جواد احمد
 

رضا میاں

سینئر رکن
شمولیت
مارچ 11، 2011
پیغامات
1,557
ری ایکشن اسکور
3,568
پوائنٹ
384
سیلز پر میں نے ایک پوری کلاس لی ہے۔ اتنی چھوٹی چیز ہے لیکن انتہائی پیچیدہ ہے۔
DNA کے متعلق ایک دلچسپ بات یہ بھی ہے کہ گو یہ اتنا چھوٹا ہوتا ہے کہ مائکروسکوپ سے بھی بمشکل دھندلا ہی نظر آتا ہے۔ لیکن اس کے باوجود اس کی لمبائی 2 میٹر ہوتی ہے!

اس کے علاوہ انسانی دل میں خون کی رگوں کا وسیع نظام veins, arteries اور capillaries اتنا چھوٹا مگر وسیع ہے کہ اس کی لمبائی ساٹھ ہزار میل تک ہے۔ اور یہ لمبائی پوری دنیاء کا دو سے زائد بار چکر لگانے کے لئے کافی ہے!

وَفِي أَنفُسِكُمْ ۚ أَفَلَا تُبْصِرُونَ
"اور خود تمہاری نفسوں میں بھی پس کیا تم غور سے نہیں دیکھتے"
 
Last edited:

اخت ولید

سینئر رکن
شمولیت
اگست 26، 2013
پیغامات
1,792
ری ایکشن اسکور
1,290
پوائنٹ
326
کلوروفل دویونانی الفاظ"کلوروس(سبز) اور فیلون(پتہ) سے ماخوذ ہے۔
کلوروفل صرف پودوں اور چند پروٹسٹس(ایک سیل والے پروٹسٹ :امیبا،پیرامیشیم وغیرہ اور ایک سے زائد سیل والا پروٹسٹ:الجی) کے سیلز میں موجود ہوتا ہے۔ پودوں کا سبز رنگ "کلوروفل" کی وجہ سے ہی ہوتا ہے۔
کلوروفل"فوٹوسینتھیسز"(پودے کا خوارک تیار کرنے کا عمل) میں انتہائی اہم کردار ادا کرتا ہے۔یہ روشنی اور توانائی کو جذب کرتا ہے۔کلوروفل تھیلیوں جیسی ساخت کے مالک "کلوروپلاسٹ" میں پایا جاتا ہے!!
 

اخت ولید

سینئر رکن
شمولیت
اگست 26، 2013
پیغامات
1,792
ری ایکشن اسکور
1,290
پوائنٹ
326
ایپی ڈرمس۔۔دویونانی الفاظ"ایپی" اور "ڈرما" سے مل کر بنا ہے۔
ایپی ڈرمس ،سیلز کی ایک شیٹ (سیلز کا مجموعہ)ہوتی ہے جو جسم کو ڈھک کر جلد بناتی ہے۔۔گویا بنیادی طور پر یہ جلد کے سیلز ہیں۔یہ جسم کی حفاظت کرتی ہے۔
پودوں میں اس کی عموما اس کی ایک تہہ(سیلز کی ایک شیٹ) ہوتی ہے۔ جبکہ جانوروں اور انسانوں میں زیادہ ترایپی ڈرمس کی کئی تہیں ہوتی ہیں۔
جب ایپی ڈرمس کے سیلز مردہ ہوتے ہیں تو ان کی جگہ نئے سیلز آجاتے ہیں اور مردہ سیلز اتر جاتے ہیں(جسے ہم عموما جلد کا اترنا کہتے ہیں)۔
اکثر لوگوں کو خشکی،سکری یا ڈینڈرف کی شکایت ہوتی ہے۔دراصل ہمارے سر پر بھی ایپی ڈرمس کی کئی تہیں ہوتی ہیں۔جب ان سیلز کا ٹرن اوور ریٹ(سیلز کا مردہ ہونا اور نئے سیلز کا بننا ) زیادہ ہوجاتا ہے تو سر کی خشکی کی شکایت ہوتی ہے۔۔جس طرح ہاتھ کی جلد اترتی ہے،اسی طرح سر کی جلد اترتی ہے جو خشکی کہلاتی ہے۔تاہم خشکی کی دوسری وجہ "فنگس" (داد وغیرہ) بھی ہو سکتی ہے۔
خشکی کی وجہ سے بال روکھے اور گرنے لگتے ہیں۔خواتین کی نسبت مردوں میں زیادہ ہوتی ہے۔18 سے 40 سال تک کی عمر میں مرض رہتا ہے۔۔بڑی عمر میں خشکی میں کمی ہوجاتی ہے۔خشکی کی صورت میں زیتون اور ناریل کےتیل کا استعمال فائدہ مند رہتا ہے
 

اخت ولید

سینئر رکن
شمولیت
اگست 26، 2013
پیغامات
1,792
ری ایکشن اسکور
1,290
پوائنٹ
326
سبز(کلوروفل والے پودے)پودوں کو فوٹوسینتھیسز(اپنی خوراک تیار کرنے کا عمل) کے لیے کاربن ڈائی آکسائیڈ(گیس) درکار ہوتی ہے جسے یہ پتوں پر موجود چھوٹے چھوٹے سوراخ نما حصوں(سٹومیٹا) کے ذریعے ہوا سےحاصل کرتے ہیں۔فوٹوسینتھیسز کے دوران "آکسیجن" (گیس)پیدا ہوتی ہے،جس کی ایک معمولی مقدار اپنے لیے محفوظ کر کے باقی "آکسیجن"ہوامیں منتقل کر دیتے ہیں جس سے انسان اور دیگر جانور سانس لیتے ہیں۔۔انسان سانس لینے کے لیے "آکسیجن استعمال کرتے ہیں اور سانس لینے کے دوران "کاربن ڈائی آکسائیڈ" باہر نکالتے ہیں۔
 

اخت ولید

سینئر رکن
شمولیت
اگست 26، 2013
پیغامات
1,792
ری ایکشن اسکور
1,290
پوائنٹ
326
بچوں کےدل کا سائز ان کی مٹھی کے سائز کے برابر ہوتا ہے۔​
 
Top