• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تمام انبیاء وشہداء اپنی قبروں میں زندہ ہیں، لیکن ان کی یہ زندگی برزخی ہے۔

سٹیٹس
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
شمولیت
جولائی 23، 2017
پیغامات
38
ری ایکشن اسکور
0
پوائنٹ
12
نعیم صاحب! مردہ لاشےمیں قیامت سےقبل روح لوٹنےکاعقیدہ صریح کفرہے،قرآن کےبیان کردہ دو زندگی اور دوموت کےقانون کا کھلا انکار ہے ___ نعیم صاحب آپ نےاپنی پوسٹ میں دو زندگی اور دوموت کےحوالےسےجوکچھ لکھا ہےوہ سراسرگمراہ کن ھے،حماقت،جہالت اورکج فہمی پرمبنی ھے ___ آپ کی اطلاع کیلۓ نیند اوربیداری جسےحدیث میں موت وحیات سےتشبیہ دی گئی ہےایک انسان اپنی اوسط زندگی میں لاکھوں مرتبہ مرتا اور زندہ ہوتا ہے، کوئی فاترالعقل ھی ہوگاجو ایک 60سالہ شخص کی نیند و بیداری کی شکل میں واقع ھونےوالی موت وحیات کوصرف ایک ہی شمار ‏‎(count)‎کرےگا . . البتہ حقیقی اور پہلی موت کےبعدقیامت سےقبل روح جسم میں نہیں لوٹےگی اوردوسری زندگی دوسرےصورپر ھی ہوگی (...فيمسك التي قضي عليهاالموت ...)___ نعیم صاحب اب آئیۓمیرے سوال کی طرف جسکاجواب دینےسےآپ لوگ مسلسل بچ رہےہیں-سوال یہ ہےکہ:__ صحیح مسلم کی حدیث کےمطابق شہداء جنت میں اڑنےوالےبرزخی جسموں کےساتھ زندہ ہیں،عرش الہی کےنیچےقندیلوں میں رھتےہیں . . لیکن آپ کے اھلحدیث"محققین" کہتےہیں کہ اڑنےوالےقالب شہداء کےبرزخی جسم نہیں بلکہ انکی سواریاں ہیں، (المسندفي عذاب القبر،تحریر:ارشدكمال صفحه97) اگرسبز اڑنےوالےقالب شہداء کےبرزخی جسم نہیں تو پھرشہداء کی ارواح خاکی جسموں سےعلیحدہ ھونےکےبعدکون سے جسموں کےساتھ جنت میں زندہ ہیں؟ کیوں کہ زندگی کیلۓ روح کا جسم میں ڈالاجانا ضروری ھےمجرد روح تو میت ھے-
 

محمد نعیم یونس

خاص رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 27، 2013
پیغامات
26,574
ری ایکشن اسکور
6,732
پوائنٹ
1,207
نعیم صاحب! مردہ لاشےمیں قیامت سےقبل روح لوٹنےکاعقیدہ صریح کفرہے،قرآن کےبیان کردہ دو زندگی اور دوموت کےقانون کا کھلا انکار ہے ___ نعیم صاحب آپ نےاپنی پوسٹ میں دو زندگی اور دوموت کےحوالےسےجوکچھ لکھا ہےوہ سراسرگمراہ کن ھے،حماقت،جہالت اورکج فہمی پرمبنی ھے ___ آپ کی اطلاع کیلۓ نیند اوربیداری جسےحدیث میں موت وحیات سےتشبیہ دی گئی ہےایک انسان اپنی اوسط زندگی میں لاکھوں مرتبہ مرتا اور زندہ ہوتا ہے، کوئی فاترالعقل ھی ہوگاجو ایک 60سالہ شخص کی نیند و بیداری کی شکل میں واقع ھونےوالی موت وحیات کوصرف ایک ہی شمار ‏‎(count)‎کرےگا . . البتہ حقیقی اور پہلی موت کےبعدقیامت سےقبل روح جسم میں نہیں لوٹےگی اوردوسری زندگی دوسرےصورپر ھی ہوگی (...فيمسك التي قضي عليهاالموت ...)___ نعیم صاحب اب آئیۓمیرے سوال کی طرف جسکاجواب دینےسےآپ لوگ مسلسل بچ رہےہیں-سوال یہ ہےکہ:__ صحیح مسلم کی حدیث کےمطابق شہداء جنت میں اڑنےوالےبرزخی جسموں کےساتھ زندہ ہیں،عرش الہی کےنیچےقندیلوں میں رھتےہیں . . لیکن آپ کے اھلحدیث"محققین" کہتےہیں کہ اڑنےوالےقالب شہداء کےبرزخی جسم نہیں بلکہ انکی سواریاں ہیں، (المسندفي عذاب القبر،تحریر:ارشدكمال صفحه97) اگرسبز اڑنےوالےقالب شہداء کےبرزخی جسم نہیں تو پھرشہداء کی ارواح خاکی جسموں سےعلیحدہ ھونےکےبعدکون سے جسموں کےساتھ جنت میں زندہ ہیں؟ کیوں کہ زندگی کیلۓ روح کا جسم میں ڈالاجانا ضروری ھےمجرد روح تو میت ھے-
محترم!
برزخی معاملات کو دنیاوی معاملات پر قیاس کرنا چھوڑ دیں..ان شاء اللہ آپ کو کافی باتوں کی اس ضمن میں سمجھ آجائے گی..
مزید اپنے کلام کی طرف بھی توجہ فرمائیں اور آئندہ گفتگو علمی انداز میں فرمائیں ورنہ مطلع کیے بغیر آپ کی پوسٹس کو حذف کیا جاسکتا ہے.
 

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,533
پوائنٹ
791
نعیم صاحب! مردہ لاشےمیں قیامت سےقبل روح لوٹنےکاعقیدہ صریح کفرہے
آپ نے بڑا اخیر قسم کا فتویٰ جڑ دیا ، آپ کے پاس اس فتویٰ کفر کی کوئی صریح دلیل بھی ہوگی ؟
مہربانی کرکے وہ صریح دلیل پیش کریں ، ویسے فتویٰ صادر فرمانے کا علم و فن کہاں سے سیکھا ؟
 
شمولیت
جولائی 23، 2017
پیغامات
38
ری ایکشن اسکور
0
پوائنٹ
12
نعیم صاحب! برزخی جسم حدیث سےثابت ہے،لہذا برزخی جسم ماننا برزخی معاملات کو دنیاوی معاملات پرقیاس کرنا ھرگز نہیں جیسا کہ آپ کا دعوی ھے ___جبکہ یہ اصول بھی قرآن وحدیث ھی سےماخوذ ہےکہ روح اورجسم کاملاپ حیات ہےاورعلیحدگی موت ہے،جسم روح کےبغیرمیت اور روح جسم کےبغیرمیت ہے . . خود آپ کےاھلحدیث"محققین" لکھتےہیں،(۱) [...روح کیلۓبھی موت ہے،لیکن روح کی موت اس کاجسم سےجدا ہونا ہے...](المسندفي عذاب القبر،تحریر:ارشدکمال، صفحه87) ___ (۲) [...اگر روح کومرنےکےبعدکسی جسم میں دوبارہ داخل کیاجاتا توقرآن کریم یااحادیث رسول ص میں اس کا واضح طورپرذکرموجود ہوتا..... بلکہ مرنےکےبعدکی حالت کوقرآن کریم میں حالت موت قرار دیاگیا ہے](عذاب قبرکی حقیقت، تحریرابوجابرعبدالله دامانوی، صفحہ88) ___ نعیم صاحب امید ہےمذکورہ بالا وضاحت کےبعد آپ میرےسوال کاعلمی انداز میں جواب دیں گے-
 
شمولیت
جولائی 23، 2017
پیغامات
38
ری ایکشن اسکور
0
پوائنٹ
12
اسحاق سلفی صاحب! مردہ لاشےمیں قیامت سےقبل روح لوٹنےکےعقیدہ کو صریح کفر قرار دینے پرآپ نےمجھ سے پوچھا ہےکہ:__ [...آپ کے پاس اس فتویٰ کفر کی کوئی صریح دلیل بھی ہوگی؟
مہربانی کرکے وہ صریح دلیل پیش کریں ، ویسے فتویٰ صادر فرمانے کا علم و فن کہاں سے سیکھا ؟] ___ اسحاق صاحب مہربانی کی اس میں کیا بات ھےآپ سورہ مومن آیت ۱۱ سیاق وسباق کےساتھ بغور پڑھ لیں آپ کو بھی معلوم ہوجاۓ گا کہ دو زندگی اور دوموت کےمنکرکون ہیں -
 
شمولیت
جولائی 23، 2017
پیغامات
38
ری ایکشن اسکور
0
پوائنٹ
12
نعیم صاحب! ایک اوسط عمرمیں انسان پر لاکھوں مرتبہ نیند و بیداری کی شکل میں واقع ھونےوالی موت وحیات کو صرف ایک شمار ‏‎(count)‎کرنا علمی شعبدےبازی ہے-اورپھرمزید یہ کہ اسےحقیقی موت (جس کا ذائقہ انسان اپنی پوری عمرمیں صرف ایک مرتبہ چکھےگا) کےساتھ خلط ملط کردینا اللہ کےکلام میں کھلی تحریف ہے ___ اسی علمی کرتب بازی اورتحریف کا مظاہرہ آپ کےالشیخ ابوجابرعبدالله دامانوی نےاپنی کتاب"عذاب قبرکی حقیقت" صفحہ97 پرکیاہے،موصوف لکھتےہیں:[دنیاوی زندگی میں روزانہ اعادہ روح کےباوجودبھی کئی زندگیاں اورکئی موتیں ثابت نہیں ہوتیں بلکہ اسےایک ھی زندگی کہاجاتاھے-موت کےبعدمیت کی طرف سوال وجواب کیلۓ اعادہ روح ہوتا ہےتو اس سےبھی زندگی ثابت نہیں ھوتی بلکہ میت بدستورمیت ھی رہتی ھے-]
 
شمولیت
جولائی 23، 2017
پیغامات
38
ری ایکشن اسکور
0
پوائنٹ
12
نعیم صاحب! سورۃ المائدۃ آیت13 میں علماۓ یہود کا ایک کردار یہ بیان ہوا ہےکہ (....يحرفون الكلم عن مواضعه ....) يعنی یہودی علماء تورات کی آیت میں بات کہیں کی ہوتی ہےاوراسےفٹ کہیں اورکرتےتھے ____ جناب آپ کےفرقۂ اھلحدیث کے"محققین" کی قرآن میں تحریف کی ایک مثال میں سورۃالزمرآیت42 کےحوالےسے پچھلی پوسٹ میں پیش کرچکاہوں ___ ایک اورمثال سورۃالمومن آیت۱۱کےحوالےسے ملاحظہ فرمائیں . . اس آیت میں دو زندگیوں اور دوموتوں کا قانون جسدعنصری(خاکی جسم) کےتعلق اورحوالےسےبیان ہوا ہے-لیکن آپ کےالشیخ ابوعبدالله جابردامانوی اپنی کتاب"عذاب قبرکی حقیقت" کےصفحہ80 پرعثمانی صاحب کےمتعلق لکھتےہیں: [...موصوف تین زندگیوں ہی کےنہیں بلکہ بےشمار زندگیوں کےقائل تھےکیونکہ برزخی جسم کا ریزہ ریزہ ھوجانا پھراس جسم کا دوبارہ بننا اورپھراس میں روح کا اعادہ اس طرح توایک ھی دن میں بےشمار زندگیاں بن جاتی ہیں-]
 
شمولیت
جولائی 23، 2017
پیغامات
38
ری ایکشن اسکور
0
پوائنٹ
12
اسحاق سلفی صاحب! امید ھےآپ نے سورہ مومن آیت ۱۱ سیاق وسباق کےساتھ بغور پڑھ لی ہوگی ___اور آپ کی یہ غلط فہمی بھی بالیقین دور ہوگئی ہوگی کہ ڈاکٹرعثمانی رح نےدو زندگیوں اور دوموتوں کےمنکرین کو ایمان سےخالی بس یونہی قرار دےدیا ہے ___ اسحاق صاحب اب یہ فیصلہ آپ کو کرنا ہےکہ مردہ لاشےمیں قیامت سےقبل اعادہ روح کےعقیدےسےتوبہ و رجوع کیاجاۓ یا سورۂ مومن آیت۱۱میں مذکورمعترفین میں شامل ہواجاۓ-(وماعلیناالاالبلاغ)
 

ابن داود

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
نومبر 08، 2011
پیغامات
3,393
ری ایکشن اسکور
2,721
پوائنٹ
556
السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
پہلے آپ فیصلہ کر لیں کہ ان دونوں میں سے کیا ہے؟
عرض ہے، نیندکو حدیث میں موت اور بیداری کو حیات قرار دیاگیا ہے،اوراسی سےاخذکیا گیا ہےکہ روح کےبغیرجسم میت اورجسم کےبغیر روح میت اور دونوں کےملاپ کا نام زندگی ہے
یا
آپ کی اطلاع کیلۓ نیند اوربیداری جسےحدیث میں موت وحیات سےتشبیہ دی گئی ہے
اسی بناء پر میں نے کہا ہے کہ آپ کو اپنی لیاقت کا خیال رکھ کر بات کرنی چاہیئے!
 

ابن داود

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
نومبر 08، 2011
پیغامات
3,393
ری ایکشن اسکور
2,721
پوائنٹ
556
السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
دو زندگی اور دوموت کےمنکرکون ہیں -
آپ؛ کہ آپ تو لاکھوں زندگی اور لاکھوں موت بتلا رہے ہیں!
ایک انسان اپنی اوسط زندگی میں لاکھوں مرتبہ مرتا اور زندہ ہوتا ہے، کوئی فاترالعقل ھی ہوگاجو ایک 60سالہ شخص کی نیند و بیداری کی شکل میں واقع ھونےوالی موت وحیات کوصرف ایک ہی شمار ‏‎(count)‎کرےگا
 
سٹیٹس
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
Top