• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تنظیم اسلامی کے بانی ڈاکٹر اسرار احمد کا عقیدہ وحدت الوجود !

ابو بصیر

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 30، 2012
پیغامات
1,420
ری ایکشن اسکور
4,197
پوائنٹ
239

ابو بصیر

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 30، 2012
پیغامات
1,420
ری ایکشن اسکور
4,197
پوائنٹ
239
یاسر صاحب اگر آپ ناراض نہ ہوں تو جو باتیں آپ نے ڈاکٹر مرحوم ؒ کی ہائی لائٹ کی ہیں ذرا انکی تشریح کر دے تا کہ تمام ساتھی جان سکے کہ آپ ڈاکٹر صاحب جیسے صاحب علم کو کیسے مشرک بناتے ہیں۔
محترم تشریح کے لیے ویڈیو لنک موجود ہے اللہ سمجھنے کی توفیق دے

آمین​
 

ابو بصیر

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 30، 2012
پیغامات
1,420
ری ایکشن اسکور
4,197
پوائنٹ
239
اللہ رب العزت ڈاکٹر صاحب کی مغفرت فرمائے اور غرق رحمت فرمائے۔
ہمارا جو آج مزاج بن گیا ہے اور مزاج میں اس قدر شدت آگئی ہے کہ کہ اسلامی شخصیات کی ذات پر فورا فتوی لگادیتے ہیں۔ ہماری اس روش نے بڑا نقصان پہنچایا ہے۔
شرک و کفر کا فتوی لگانے میں بڑی احتیاط کی ضرورت ہے اور یہ خاص اہل علم حضرات سے وابسطہ ہے، ہمیں ایسے ایشو پر بات کرنے کی بھی اخلاقی اجازت نہیں،
احتیاط کرنی چاہئے۔
یہ ضرور ہے کہ ڈاکٹر صاحب کے ماضی کے خیالات پر علمائ کرام کے تحفظات تھے جسے ڈاکٹر صاحب نے بھی محسوس کیا تھا،
لیکن جب قرآن کے دروس کی طرف پلٹے تو اس زمانے میں اپنے بہت سے خیالات سے دستبردار ہوگئے یا خاموش ہوگئے،
یہ معاملہ اب اللہ تعالی کی عدالت میں ہے ہمیں اس پر بات نہیں کرنی چاہئے،
ڈاکٹر صاحب صاحب بصیرت، اچھے اور نفیس انسان تھے آخر وقت میں وہ قرآنی فکر کی دعوت کی طرف متوجہ ہوئے جن میں ان کی بڑی خدمات ہیں، اللہ تعالی انہیں بہترین جزاء عطا فرمائے۔
اللہ تعالی ہمیں سمجھ عطا فرمائے اور ہمارے ایمان کی حفاظت فرمائے۔
محترم میری ڈاکٹر صاحب سے کوئی ذاتی دشمنی نہیں ہے اور کسی کو برے القاب سے نوازنا ہمارے اسلاف کاشیوہ نہیں البتہ دعوت و تبلیغ میں حق بات کو بیان کرنا اور باطل عقائد سے لوگوں کو باخبر کر دینا یہ ہمارے علماء کی ذمہ داری رہی ہے۔۔۔۔۔۔۔۔اللہ حق بات کو سمجھنے کی توفیق دے آمین
 

مدثر الیاس

مبتدی
شمولیت
مئی 06، 2013
پیغامات
10
ری ایکشن اسکور
21
پوائنٹ
3
السلام علیکم...
میں نے اس کتاب میں وہی مضمون پڑھا اور اگر آپ شروع سے پڑھیں تو مجھے نہیں لگتا کہ آپ کو برا لگے. وقت کی کمی کی وجہ سے میں زیادہ نہیں لکھ سکتا. لیکن یہ تھریڈ دیکھ لیں جس میں اس عقیدہ کی اور ڈاکٹر صاحب کے موقف کی تھوڑی وضاحت کی گئی...

.. ڈاکٹر اسرار صاحب نے شروع میں ہی واضح کر دیا کہ الله کو ہر چیز ماننا سب سے بڑا شرک ہے. اس عقیدہ کا نام عقیدہ ہمااوست ہے جو ہندوؤں کا ہے... آپ نے جو ویڈیو دی توصیف الرحمان صاحب کی تو وہ میں ایک عرصہ پہلے دیکھ چکا ہوں. جو مجے میرے دوست جو سلفی ہیں، انہوں نے دی لیکن کچھ ہے دنوں بعد انہوں نے شیخ صاحب سے منہ موڑ لیا کہ وہ صرف کچھ چیزیں لے کر دوسرے ککیتب سے فتنہ پھیلاتے ہیں. شیخ صاحب ہمارے علاقہ کے ہی ہیں اور آجکل دوسرے ملک سے فرقہ واریت پھیلانے کا کام کرتے ہیں. یہ باتیں میرے دوست نے کہیں جو سلفی ہے اور انکا بھائی مسجد مے امام ہے گوجرانوالہ میں.
ڈاکٹر اسرار کی قرآن پاک کے تراجم اور تفسیر پوری دنیا میں مشہور اور مانی جاتی ہیں. آپ جس طرح سے انکے عقیدہ کو پیش کرتے ہیں وہ تو کسی قرآن پڑھنے والی کا نہیں ہو سکتا. لیکن آپ ان کے تراجم سن لیں اور آپ کو ایسی کوئی چیز نہیں ملے گی. اس لئے بہتر ہوتا ہے کہ کسی کے موقف کو پوری طرح سمجھ لیا جاے...
http://www.kitabosunnat.com/forum/وحدت-الوجود-472/نظریۂ-وحدتُ-الوجود-اور-ڈاکٹر-اسراراحمد-6457/
 

ابو بصیر

سینئر رکن
شمولیت
اکتوبر 30، 2012
پیغامات
1,420
ری ایکشن اسکور
4,197
پوائنٹ
239
السلام علیکم...
میں نے اس کتاب میں وہی مضمون پڑھا اور اگر آپ شروع سے پڑھیں تو مجھے نہیں لگتا کہ آپ کو برا لگے. وقت کی کمی کی وجہ سے میں زیادہ نہیں لکھ سکتا. لیکن یہ تھریڈ دیکھ لیں جس میں اس عقیدہ کی اور ڈاکٹر صاحب کے موقف کی تھوڑی وضاحت کی گئی...

.. ڈاکٹر اسرار صاحب نے شروع میں ہی واضح کر دیا کہ الله کو ہر چیز ماننا سب سے بڑا شرک ہے. اس عقیدہ کا نام عقیدہ ہمااوست ہے جو ہندوؤں کا ہے... آپ نے جو ویڈیو دی توصیف الرحمان صاحب کی تو وہ میں ایک عرصہ پہلے دیکھ چکا ہوں. جو مجے میرے دوست جو سلفی ہیں، انہوں نے دی لیکن کچھ ہے دنوں بعد انہوں نے شیخ صاحب سے منہ موڑ لیا کہ وہ صرف کچھ چیزیں لے کر دوسرے ککیتب سے فتنہ پھیلاتے ہیں. شیخ صاحب ہمارے علاقہ کے ہی ہیں اور آجکل دوسرے ملک سے فرقہ واریت پھیلانے کا کام کرتے ہیں. یہ باتیں میرے دوست نے کہیں جو سلفی ہے اور انکا بھائی مسجد مے امام ہے گوجرانوالہ میں.
ڈاکٹر اسرار کی قرآن پاک کے تراجم اور تفسیر پوری دنیا میں مشہور اور مانی جاتی ہیں. آپ جس طرح سے انکے عقیدہ کو پیش کرتے ہیں وہ تو کسی قرآن پڑھنے والی کا نہیں ہو سکتا. لیکن آپ ان کے تراجم سن لیں اور آپ کو ایسی کوئی چیز نہیں ملے گی. اس لئے بہتر ہوتا ہے کہ کسی کے موقف کو پوری طرح سمجھ لیا جاے...
http://www.kitabosunnat.com/forum/وحدت-الوجود-472/نظریۂ-وحدتُ-الوجود-اور-ڈاکٹر-اسراراحمد-6457/
لگتا ہے اندھی محبت کا رواج چل نکلا ہے

 

aqeel

مشہور رکن
شمولیت
فروری 06، 2013
پیغامات
299
ری ایکشن اسکور
315
پوائنٹ
119
ہر چیز کو اللہ ماننا ایسا تو کوئی جائل بھی نہیں سوچ سکتا ،چا جائیکہ کہ علما پر اسطرح کا لزام لگایا جائے۔سید نذیر حسین دہلویؒ ساری زندگی ابن عربیؒ کا دفاع کرتے رہئے ،تو کیا وہ اس مشرکانہ عقیدے کا دفاع کرتے رہئے۔رب العالمین ہم سب کو ہر محفوظ فرمائیں۔
 

گڈمسلم

سینئر رکن
شمولیت
مارچ 10، 2011
پیغامات
1,407
ری ایکشن اسکور
4,910
پوائنٹ
292
ہر چیز کو اللہ ماننا ایسا تو کوئی جائل بھی نہیں سوچ سکتا ،چا جائیکہ کہ علما پر اسطرح کا لزام لگایا جائے۔سید نذیر حسین دہلویؒ ساری زندگی ابن عربیؒ کا دفاع کرتے رہئے ،تو کیا وہ اس مشرکانہ عقیدے کا دفاع کرتے رہئے۔رب العالمین ہم سب کو ہر محفوظ فرمائیں۔
یعنی آپ یہ تسلیم کرتے ہیں کہ ابن عربی اس عقیدے کا حامل تھا ؟؟
 

تجمل

مبتدی
شمولیت
مئی 14، 2013
پیغامات
2
ری ایکشن اسکور
3
پوائنٹ
0
An email reply from Markaz Tanzeem-e-Islami regarding the issue Dr. Israr & Wahdat ul Wajoood
Respected Brother
Assalam o alaikum WRWB
We pray from Allah Almighty that you read this mail in the best of health & iman.
We have received some emails regarding as to Wahda-tul-wajood & Dr. Israr Ahmad Marhoom since his death. We are only surprised why such a controversy has been created at this time. His opinions regarding this issue were not kept secret in his life and were stated explicitly in select gatherings as this issue naturally interests only thoughtful minds.
Brother! We think that all this controversy—intentionally created or otherwise—is based upon a simple misunderstanding. Wahda-tul-Wajood is a term which has been used to describe many different ideas / philosophies. (This phenomenon is not something un-heard of in the history of ideas.) Some of such ideas are an obvious Kufr, while others are not completely against the shariah, rather they are subtly aligned with certain verses of the Holy Quran, and hence are acknowledged by the most respectable scholars of Ahl-e-Sunnat. (To learn more about it, you may refer to enlightening elucidation of the subject by Molana Ashraf Ali Thanwi (May Allah bless on him)
In short, if one tries to encapsulate different uses, he will find that the term “Wahda-tul-Wajood” has been used in three shades of meanings:
1. As a synonym of “Pantheism”. Pantheiesm refers to the belief that God & Universe are not two separate beings. They are one. God is Universe & Universe is God. This is know as “Hama-Oost” (ہمہ اوست) in Persian.
There can be no two opinions about it that this is Kufr & in reality nothing less than Atheism. (This idea is deeply rooted in both Budhist Philosophy & Modern Western Philosophy. All such talk about “Universal Consciousness” or the “Mother Earth” means nothing but the Pantheism).
2. As a synonym of “Monism” i.e. “ontological monism”. Monism or Hama-az-oost (ہمہ از اوست) refers to the belief that nothing exists but God. Everything else is just a manifestation (ظہور) or a shade (ظل) of the God. This interpretation treats the Universe / Matter as nothing but an illusion created by God.
This view may not be according to shariah, but it does not explicitly amount to shirk, (as it treats Makhlooq as ‘ghair’ of Allah).
3. As a synonym of “Monotheism” which entails one Creator and multiple created beings. This interpretation defines “Wajood” / Being as a characteristic of an eternal & self-sufficient being. As only Allah Almighty fulfills this criteria, only He ‘exists’ in the real sense of this term. All else, in effect, has no real ‘existence’ like that of Allah and therefore is nothing except illusion which comes into being by an edict of Allah and for a limited time.
If we ponder upon this interpretation, it amounts to nothing but Monotheism (Tauheed). As we do not possess knowledge in the same sense in which Allah is Al-Aleem and as we do not hold power in the same sense in which Allah is Al-Qadeer, we do not ‘exist’ in the same sense in which Allah exists. No comparison is possible between one who is eternal (الاول والاخر) self-sufficient (الحی القیوم) [philosophically known as Necessary Being (واجب الوجود)] & those whose existence depends upon Him [known as contingent beings (ممکن الوجود)].
Unfortunately those who are creating misconceptions do not take into account the aforesaid differences in the usage of this term and thus unjustly put an identical label of ‘shirk’ on them.
Brother! It is quite evident (as is evident from his various speeches and writings) that Dr. Israr Ahmad Marhoom believed that Wahat-ul-Wajood in the third sense of this term was, by no means, against Islam and those who believed in this interpretation were not to be disrespected the way many of our narrow minded self-proclaimed scholars did. He always said that he was not a preacher of this notion; instead his only purpose to deliberate on it was to remove the misconceptions that lead to widening the gap between different sects of ahl-e-sunnat.
Any way Dr. Sahib’s views about Wahda-tul-wajood were expressed as his personal views. It is not binding upon every member of Tanzeem-e-Islami to agree with him on every issue. Anyone can be a member of Tanzeem-e-Islami as long as he / she believe in the following things.
a) That he/she conforms to the aqaid of ahl-e-sunnat
b) Islam is a complete code of life encompassing each & every aspect of human life from rituals to politics.
c) As muslims, it is our duty to strive for the establishment of Islam as the dominant rule and try to enforce it in every sphere of our individual & collective lives.
d) Establishment of Islam as a system is only possible through struggle waged by a revolutionary mass movement.
We hope that the above clarification would help understand the subject. Pls feel free to ask if it is still unclear.
May Allah accept all our efforts for this cause (Ameen)
 
Top