• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

قرآن عظیم الشان کے عربی پر اعتراضات

شمولیت
مارچ 15، 2012
پیغامات
153
ری ایکشن اسکور
493
پوائنٹ
95
برادرم عبدالعلام صاحب سوچیں ذرا حضرت عیسی علیہ السلام نے فرمایا انی اخلق اور آپ اخلق کامعنی اصنع سے کرتے ہو؟ کیوں ؟جب کہ اللہ سبحانہ وتعالی نے ان کو کہا تھا واذتخلق جب تم پیدا کررہے تھے اور آپ ایک بعید تاویل کرتےہو کتنی افسوس کی بات ہے ؟؟؟دوسری بات اگریہ صرف عام کام تھا تو باذن اللہ انھوں نے کیوں کہا ؟؟؟
اسی طرح فتبارک اللہ احسن الخالقین میں اللہ نے اپنے آپ کو سب خالقوں سے بھترین خالق کہا کیوں ؟؟؟اس کامقصد یہ ہوا کہ خالق اور بھی ہے صرف بنانے والے مراد نھیں کیا میں اپنے آپ کو اس آیت کی سمجھنے میں عقل سے پیدل کردو؟؟؟
یہ صحیح تاویل ہے بعید نہیں- اللہ تعالی نے فرمایا وخلق کل شی وہو بکل شی علیم نیز فرمایا خالق کل شی فاعبدوہ وھو علی کل شی وکیل آپ کے استاد مھترم کے جدید ترین فلسفے کے مطابق تو اللہ احسن الخالقین ہے تو خلق کل شی اور خالق کل شی کے کیا معنی کیجیے گا-واضح رہے کہ اجازت سے کام ہونا اور خود کام کرنا اس مین ھر عقلمند کے یہاں فرق ہوتا ہے- اگر آپ کا بیٹا آپ کی اجازت سے کسی لرکی سے نکاح کرتا ہے تو نوشہ وہ ہوگا آپ نہیں- نیز یہ آیات دیکھیے- الا لہ الخلق والامر تبارک اللہ رب العلمین(الاعراف54) ام جعلوا للہ شرکاء خلقوا کخلقہ فتشابہ الخلق علیھم قل اللہ خالق کل شی وھو الواحد القھار(الرعد-16) انسان جوڑا ہے لیکن کئی جگہ اللہ تعالی نے اس کی تخلیق کی نسبت خاص اپنی طرف کی ہے- مثلا دیکھیے(الحجر33 اور 26)
 
شمولیت
مارچ 15، 2012
پیغامات
153
ری ایکشن اسکور
493
پوائنٹ
95
الیاسی صاحب مجھے بہت افسوس ہے - جس طرح آپ کے استاد محترم قران وسنت کی زبان عربی سے نابلد ہیں- اسی طرح مین انگریزی سے نا واقف ہوں -خاطر جمع رکھیں کوی نا کوی موسی عصا لیکر ضرور آے گا- تب تک میری جانب سے سلام
 

انس

منتظم اعلیٰ
رکن انتظامیہ
شمولیت
مارچ 03، 2011
پیغامات
4,178
ری ایکشن اسکور
15,329
پوائنٹ
800
الیاسی صاحب کسی کی بات کا جواب دئیے بغیر اپنی بات ہی کیے جاتے ہیں۔
الیاسی صاحب ان کرسچن کی بات اپ نہ ہی کریں تو بہتر ہے- ہمارے لیے تو بھیا جو ہیں آپ ہیں- آپ نے اپنے استاد محترم کی جو تحقیق پیش فرماءی ہے اس کا خلاصہ میں یہ سمجھا ہوں کہ آپ حضرات کے نزدیک قران میں جہاں جمع کا صیغہ استعمال ہوا ہے ان میں بہت سے مقامات پر وہ اللہ کا کلام ہے ہی نہیں بلکہ کارکنان ٖقدرت کا کلام ہے- گویا قران کو صرف کلام الہی سمجھنا غلطی ہے(نعوذباللہ)- دوسرے جو چیزیں جوڑا جوڑا بنائ گیی ہیں وہ کارکنان قدرت کی تخلیق ہے اور اللہ نے صرف وہ چیزیں بنای جو جوڑا نہیں ہیں -اگر میں صحیح سمجھا ہوں تو بتادیں تاکہ ناچیز کچھ عرض کرسکے-
اس بارے میں اپنا موقف واضح کریں کہ کیا آپ کے نزدیک قرآن اللہ کا کلام نہیں بلکہ کارکنان قدرت کا کلام ہے۔ اور کیا اس کائنات میں اللہ کے علاوہ کوئی اور بھی خالق ورازق موجود ہے حالانکہ فرمانِ باری ہے:
﴿ يـٰأَيُّهَا النّاسُ اذكُر‌وا نِعمَتَ اللَّـهِ عَلَيكُم ۚ هَل مِن خـٰلِقٍ غَيرُ‌ اللَّـهِ يَر‌زُقُكُم مِنَ السَّماءِ وَالأَر‌ضِ ۚ لا إِلـٰهَ إِلّا هُوَ ۖ فَأَنّىٰ تُؤفَكونَ ٣ ﴾ ... سورة فاطر
لوگو! تم پر جو انعام اللہ تعالیٰ نے کئے ہیں انہیں یاد کرو۔ کیا اللہ کے سوا اور کوئی بھی خالق ہے جو تمہیں آسمان وزمین سے روزی پہنچائے؟ اس کے سوا کوئی معبود نہیں۔ پس تم کہاں الٹے جاتے ہو (3)

﴿ أَم جَعَلوا لِلَّـهِ شُرَ‌كاءَ خَلَقوا كَخَلقِهِ فَتَشـٰبَهَ الخَلقُ عَلَيهِم ۚ قُلِ اللَّـهُ خـٰلِقُ كُلِّ شَىءٍ وَهُوَ الوٰحِدُ القَهّـٰرُ‌ ١٦ ﴾ ... سورة الرعد
کیا جنہیں یہ اللہ کے شریک ٹھہرا رہے ہیں انہوں نے بھی اللہ کی طرح مخلوق پیدا کی ہے کہ ان کی نظر میں پیدائش مشتبہ ہوگئی ہو، کہہ دیجئے کہ صرف اللہ ہی تمام چیزوں کا خالق ہے وه اکیلا ہے اور زبردست غالب ہے (16)

اسی طرح آپ نے کفایت اللہ بھائی کی بات کا بھی جواب نہیں دیا۔ میں سمجھتا ہوں وہ اصل بنیاد ہے جہاں سے بات شروع ہونی چاہئے۔
 

الیاسی

رکن
شمولیت
فروری 28، 2012
پیغامات
425
ری ایکشن اسکور
736
پوائنٹ
86
الیاسی صاحب مجھے بہت افسوس ہے - جس طرح آپ کے استاد محترم قران وسنت کی زبان عربی سے نابلد ہیں- اسی طرح مین انگریزی سے نا واقف ہوں -خاطر جمع رکھیں کوی نا کوی موسی عصا لیکر ضرور آے گا- تب تک میری جانب سے سلام
جناب عبدالعلام صاحب آپ پریشان نا ہو اس مضمون کا اردو اور عربی میں ترجمہ ھورہاہے جلد آپ کی خدمت میں پیش کرونگا اگر اللہ سبحانہ وتعالی نے چاہا تو
 

الیاسی

رکن
شمولیت
فروری 28، 2012
پیغامات
425
ری ایکشن اسکور
736
پوائنٹ
86
یہ صحیح تاویل ہے بعید نہیں- اللہ تعالی نے فرمایا وخلق کل شی وہو بکل شی علیم نیز فرمایا خالق کل شی فاعبدوہ وھو علی کل شی وکیل آپ کے استاد مھترم کے جدید ترین فلسفے کے مطابق تو اللہ احسن الخالقین ہے تو خلق کل شی اور خالق کل شی کے کیا معنی کیجیے گا-واضح رہے کہ اجازت سے کام ہونا اور خود کام کرنا اس مین ھر عقلمند کے یہاں فرق ہوتا ہے- اگر آپ کا بیٹا آپ کی اجازت سے کسی لرکی سے نکاح کرتا ہے تو نوشہ وہ ہوگا آپ نہیں- نیز یہ آیات دیکھیے- الا لہ الخلق والامر تبارک اللہ رب العلمین(الاعراف54) ام جعلوا للہ شرکاء خلقوا کخلقہ فتشابہ الخلق علیھم قل اللہ خالق کل شی وھو الواحد القھار(الرعد-16) انسان جوڑا ہے لیکن کئی جگہ اللہ تعالی نے اس کی تخلیق کی نسبت خاص اپنی طرف کی ہے- مثلا دیکھیے(الحجر33 اور 26)
برادرم عبدالعلام صاحب میں بھی تو یھی کہتا ہوں کہ اللہ خالق کل شیء اللہ تعالی ہرچیز کا خالق ہے اس سے کبھی انکار نھیں کیا کبھی بھی لیکن حضرت عیسی علیہ السلام کو جو اللہ تعالی نے خالق کہا ہے انی اخلق کی ساتھ تو اس میں صاف لکھا ہے باذن اللہ تخلیق ہوگا صرف باذن اللہ اسی طرح فتبارک اللہ احسن الخالقین میں جن بہت سارے خالقین کاتذکرہ ہے وہ سب باذن اللہ ہی ہونگے
 

انس

منتظم اعلیٰ
رکن انتظامیہ
شمولیت
مارچ 03، 2011
پیغامات
4,178
ری ایکشن اسکور
15,329
پوائنٹ
800
الیاسی صاحب کسی کی بات کا جواب دئیے بغیر اپنی بات ہی کیے جاتے ہیں۔


اس بارے میں اپنا موقف واضح کریں کہ کیا آپ کے نزدیک قرآن اللہ کا کلام نہیں بلکہ کارکنان قدرت کا کلام ہے۔ اور کیا اس کائنات میں اللہ کے علاوہ کوئی اور بھی خالق ورازق موجود ہے حالانکہ فرمانِ باری ہے:
﴿ يـٰأَيُّهَا النّاسُ اذكُر‌وا نِعمَتَ اللَّـهِ عَلَيكُم ۚ هَل مِن خـٰلِقٍ غَيرُ‌ اللَّـهِ يَر‌زُقُكُم مِنَ السَّماءِ وَالأَر‌ضِ ۚ لا إِلـٰهَ إِلّا هُوَ ۖ فَأَنّىٰ تُؤفَكونَ ٣ ﴾ ... سورة فاطر
لوگو! تم پر جو انعام اللہ تعالیٰ نے کئے ہیں انہیں یاد کرو۔ کیا اللہ کے سوا اور کوئی بھی خالق ہے جو تمہیں آسمان وزمین سے روزی پہنچائے؟ اس کے سوا کوئی معبود نہیں۔ پس تم کہاں الٹے جاتے ہو (3)

﴿ أَم جَعَلوا لِلَّـهِ شُرَ‌كاءَ خَلَقوا كَخَلقِهِ فَتَشـٰبَهَ الخَلقُ عَلَيهِم ۚ قُلِ اللَّـهُ خـٰلِقُ كُلِّ شَىءٍ وَهُوَ الوٰحِدُ القَهّـٰرُ‌ ١٦ ﴾ ... سورة الرعد
کیا جنہیں یہ اللہ کے شریک ٹھہرا رہے ہیں انہوں نے بھی اللہ کی طرح مخلوق پیدا کی ہے کہ ان کی نظر میں پیدائش مشتبہ ہوگئی ہو، کہہ دیجئے کہ صرف اللہ ہی تمام چیزوں کا خالق ہے وه اکیلا ہے اور زبردست غالب ہے (16)

اسی طرح آپ نے کفایت اللہ بھائی کی بات کا بھی جواب نہیں دیا۔ میں سمجھتا ہوں وہ اصل بنیاد ہے جہاں سے بات شروع ہونی چاہئے۔
 

الیاسی

رکن
شمولیت
فروری 28، 2012
پیغامات
425
ری ایکشن اسکور
736
پوائنٹ
86
محترم جناب انس نظر صاحب جناب کفایت اللہ صاحب جناب عبد العلام صاحب ودیگر قاریین
وَقَدْ كَانَ فَرِيقٌ مِنْهُمْ يَسْمَعُونَ كَلَامَ اللَّهِ ثُمَّ يُحَرِّفُونَهُ
إِنِّي اصْطَفَيْتُكَ عَلَى النَّاسِ بِرِسَالَاتِي وَبِكَلَامِي
وَإِنْ أَحَدٌ مِنَ الْمُشْرِكِينَ اسْتَجَارَكَ فَأَجِرْهُ حَتَّىٰ يَسْمَعَ كَلَامَ اللَّهِ
يُرِيدُونَ أَنْ يُبَدِّلُوا كَلَامَ اللَّهِ
ان چار آیات مبارکہ سے بالکل واضح ہے کہ قرآن مجید اللہ کاکلام ہے لیکن یہ بھی ایک واضح حقیقت ہے کہ قرآن مجید کی اندر فرعون ۔شیطان ۔ حضرت سیدنا ابراھیم علیہ السلام کا حضرت سیدنا موسی علیہ السلام کافرشتوں کا ھدھد کا ملکہ سبا کا
حضرت سیدنا لوط علیہ السلام کا سب کا کلام موجود ہے
پھر اللہ سبحانہ وتعالی نے ان کو جمع کرکے یکجاکرکے نازل فرمایا
اب بات یہ ہے جھاں اللہ سبحانہ وتعالی کوئی حکم دے رھے ہیں تو ھم بولینگے اللہ نے کھا جھاں شیطان کی بات آتی ہے تو ھم کھینگے کہ شیطان نے کھا کہ ااسجد لمن خلقت طینا اسی طرح شیطان نے کہا تھا خلقتنی من نار وخلقتہ من طین اب سوال یہ کہ جھاں ھم یا نحن یا نا کاصیغہ ہے وھاں ھم کیا کہیں ؟؟؟ کہ کس نے کہا ؟؟؟ اسی پرسارا بحث ہے
 

سعدیہ

مبتدی
شمولیت
فروری 23، 2013
پیغامات
11
ری ایکشن اسکور
43
پوائنٹ
11
اس بحث نے تو پریشان کردیا اھل علم کدہر ہے؟؟؟
 
Top