1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

امام ابن تیمیہؒ نے تاتاریوں کی تکفیر اور ان کے خلاف قتال کیوں کیا؟

'خوارج' میں موضوعات آغاز کردہ از القول السدید, ‏جولائی 18، 2013۔

  1. ‏جولائی 29، 2013 #31
    ام کشف

    ام کشف رکن
    جگہ:
    islamabad
    شمولیت:
    ‏فروری 09، 2013
    پیغامات:
    124
    موصول شکریہ جات:
    382
    تمغے کے پوائنٹ:
    53

    یہ کہاں لکھا ہے
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 1
    • لسٹ
  2. ‏جولائی 29، 2013 #32
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    لگتا ہے جناب نے تکفیر کی تجربہ گاہ فورم کو بنایا ہوا ہے مہربانی کرکے اگر یہی تجربہ آپ جی ایچ کیو اور پارلیمنٹ کے سامنے کر لیں تو بات بن جائے ۔
     
    • شکریہ شکریہ x 4
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  3. ‏جولائی 29، 2013 #33
    ابومحمد

    ابومحمد رکن
    جگہ:
    کوٹ ادو
    شمولیت:
    ‏جنوری 19، 2013
    پیغامات:
    301
    موصول شکریہ جات:
    546
    تمغے کے پوائنٹ:
    86

    حافظ سعید صاحب نے شام کے جہاد کو صحیح کہا ہے
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  4. ‏جولائی 29، 2013 #34
    گڈمسلم

    گڈمسلم سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 10، 2011
    پیغامات:
    1,407
    موصول شکریہ جات:
    4,907
    تمغے کے پوائنٹ:
    292

    موجودہ دور میں جماعۃ الدعوہ پر یہ الزام عائد کیا جا رہا ہے کہ ہم شام میں رافضیوں کے خلاف ہونے والی اہل السنہ کی لڑائی کو فساد کہتے ہیں اور اس لڑائی کو حرام کہتے ہیں، جو کہ سراسر بے بنیاد اور من گھڑت لوگوں کے منہ کی باتیں ہیں۔ ہم شام کے مظلوم مسلمانوں کی حمایت میں پہلے دن سے اپنا موقف واضح اور دوٹوک رکھتے ہیں،اور آج بھی اس کا برملا اظہار کرتے ہیں۔ اور شعیوں کے بارے بھی ہم وہی عقیدہ رکھتے ہیں جو تمام اہل السنہ علماء کا ہے ، جو کہ ہم گاہے گاہے آپ کے سامنے بیان کرتے رہیں گے ۔ ہم امید کرتے ہیں کہ انٹرنیٹ پر جماعت الدعوۃ کے خلاف پروپیگنڈہ کرنے والے حضرات خوف خدا رکھتے ہوئے اسلام اور اہل اسلام کے لیے امن کا پیغام ثابت ہوں-


     
    • زبردست زبردست x 3
    • پسند پسند x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  5. ‏جولائی 29، 2013 #35
    محمد علی جواد

    محمد علی جواد سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 18، 2012
    پیغامات:
    1,988
    موصول شکریہ جات:
    1,495
    تمغے کے پوائنٹ:
    304

    آپ کی بات سے تو یہ مطلب اخذ کیا جا سکتا ہے کہ اگر مرزایوں کو حکومت یا علماء کافر قرار دیں تو ہم اور آپ ان کو کافر مانیں ورنہ عوام کو یہ اختیار نہیں کہ کہ وہ خود سے مرزایوں کو کافر قرار دے سکیں ؟؟؟؟؟؟؟
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 2
    • ناپسند ناپسند x 2
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • لسٹ
  6. ‏جولائی 29، 2013 #36
    محمد علی جواد

    محمد علی جواد سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 18، 2012
    پیغامات:
    1,988
    موصول شکریہ جات:
    1,495
    تمغے کے پوائنٹ:
    304

    مرزایوں کے متعلق آپ کا کیا عقیدہ ہے کیا آپ نے ان کی کتابیں پڑھیں ؟؟؟ اگر حکومت وقت یا علما ء ان کے متعلق کفر کا فتویٰ نا لگاتے تو آپ ان کے بارے میں کیا راے رکھتے؟؟ کیا اس بات کا انتظار کرتے کہ علماء ان کو کافر قرار دیں تم ہم ان کو کافر مانیں گے ؟؟؟

    اگر حکمران صریح کفر کے مرکتب ہوں جیسے یہود و نصاریٰ کو دعوت دیں کہ مسلمانوں پر بمباری کریں بے گناہوں کا خوں بہائیں - تو کیا پھر بھی ہمیں علماء کے فتوے انتظار کرنا پڑے گا ؟؟؟ کہ اگر وہ حکمرانوں کو کافر قرار دیں گے تو مانیں گے ورنہ نہیں ؟؟؟ جب کہ عوام اس قابل نا ہو کہ حکمرا نوں کو اس کفر سے باز رکھے ؟؟

    جواب کا انتظار رہے گا
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • غیرمتفق غیرمتفق x 3
    • متفق متفق x 2
    • لسٹ
  7. ‏جولائی 29، 2013 #37
    علی ولی

    علی ولی مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 26، 2013
    پیغامات:
    68
    موصول شکریہ جات:
    81
    تمغے کے پوائنٹ:
    21

    محمد جواد بھائی ، اللہ آپ سے راضی ہو ۔

    مجھے حیرت ہے کہ آپ کیوں دانستہ طور پر اس حقیقت کو نظر انداز کر رہے ہیں کہ قادیانی کے مرتد و کافر یا زندیق ہونے پر علماء اہل السنہ کا اتفاق ہوچکا ہے اور ان پر تکفیر المعین کی تمام شروط و موانع برسر عدالت پورے اور زائل کیئے جاچکے ہیں۔ اور اہل علم اور اہل قضاء انکے ارتداد کی تصدیق کر چکے لہذا انکے مرتد اور زندیق ہونے میں کسی بھی مکتبہ فکر کے کسی بھی پیروکار کو کوئی شک نہیں الحمداللہ ، ا
     
    • متفق متفق x 2
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  8. ‏جولائی 29، 2013 #38
    علی ولی

    علی ولی مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 26، 2013
    پیغامات:
    68
    موصول شکریہ جات:
    81
    تمغے کے پوائنٹ:
    21

    محترم آپ ایک ایسے گروہ کی تکفیر یعنی قادیانی کو مسلم حکمرانوں اور اداروں کی تکفیر سے خلط ملط کر رہے ہیں۔ آپ میری طرف سے جس کو مرضی قادیانی کی طرح مرتد قرار دے دیں ، بھلا مجھے کیا اعتراض ہوگا، لیکن آپ قادیانی جیسی تکفیر کے لئے وہی راہ اختیار کرنا لازم ہے، جس سے گزر کر قادیانی مرتد بنے۔ تب ا
    جو کہ میری ناقص معلومات کے مطابق کہیں بھی پورا نہیں کیا گیا۔

    اور رہا آپ کا دوسرا سوال ، تو معذرت کے ساتھ ، اس میں کچھ تفصیل ہے ، میں استفادہ عام کے لئے پیش کیٗے دیتا ہوں۔ ان شاء اللہ

    اہل السنۃ کے ہاں مسئلہ تکفیر میں اصول و ضوابط کا التزام اور اس مسئلہ میں کلام کے اہل لوگوں کی وضاحت اچھی طرح کر دی گئی ہے ۔
    مگر آج کل تکفیری لوگ ( جو لوگوں کی بلا دلیل وغیر منصفانہ تکفیر کر تے ہیں ) دعویٰ کرتے ہیں کہ کوئی بھی معیّن تکفیر کر سکتا ہے ( یعنی کسی معیّن مسلمان کو کافر قرار دینا) اور تکفیر کرنے کے بعد اس کو معاشرہ میں واضح کرنا اپنا اولین فریضہ سمجھتے ہیں اور اس چیز کا انکار کرتے ہیں کہ تکفیر معیّن صرف جید علماءاور فقہاء کا کام ہے ۔
    تکفیری یہ کیوں کہتے ہیں ؟اس لیے کہ جن کی وہ تکفیر کر رہے ہوتے ہیں مثلا معین حکمران وغیرہ علماء اہل السنۃ ( جن سے خود تکفیری حضرا ت عقیدہ ، تفسیر اور فقہ لیتے ہیں ) وہ ان حکمرانوں کی معین تکفیر نہیں کر رہے ہوتے ۔
    یہاں سے یہ مسئلہ تکفیر فتنہ کی شکل اختیار کرتا ہے کہ اگر آجکل علماء اہل السنۃ حکمرانوں کی تکفیر معین نہیں کرتے تو یہ تکفیر ی حضرات اس نتیجے پر پہنچ گئے ہیں اب یہ کام ان پر اور ہر عام آدمی پر لازم ہے کہ چاہے وہ تکفیر معین کے اصول وضوابط جانے یا نہ جانے وہ اس کا مکلف ہو یا نہ ہو ( یقیناً مکلف تو اہل علم ہی ہیں ) وہ لوگوں کو کافر قرار دے گا خاص طور پر حکمرانوں کو معین کر کے ،لہذا بغیر علم اور آگاہی کے حلال کو حرام اور حرام کو حلال کرنا انکا پسندیدہ مشغلہ ٹھہرا !!
    کسی خاص شخص کی تکفیر کو ن کرے گا اور کن شروط و قیود پر کرے گا ؟ ایک قابل و ضاحت مسئلہ ہے مگر تکفیری حضرات اس مسئلہ کو کبھی واضح نہیں کرتے مقصد صاف ہے تاکہ وہ اس پر خطر کام کو اس طرح مسخ کریں کہ لوگ انہیں حق پر اور اہل السنہ کے علماءکو حقیر و گمراہ جانیں ۔
    یہ عام عادت ہے کہ تکفیری حضرات لوگوں کی نظر میں اہل علم کی اتنی تحقیر کر دیتے ہیں کہ لوگ اس مسئلہ میں الجھ جاتے ہیں ۔
    وہ لوگ جن کی تکفیر کی جا سکتی ہے وہ مختلف ہیں اسی طرح جو تکفیر کرنے کا حق رکھتے ہیں وہ بھی مختلف ہیں ۔یہ بات ہم آنے والی سطورمیں سلف صالحین کے فہم کی روشنی میں واضح کریں گے انشا ءاللہ ۔
    تکفیر کے لحاظ سے :
    1۔ کچھ لوگ وہ ہیں کہ جن کی تکفیر کا حق صرف اور صرف علماء کو ہے اور کسی عامی کو یادینی علم و حکمت سے کورے شخص کو نہیں ۔
    اور کچھ لوگ وہ ہیں جن کی ہر مسلمان تکفیر کر سکتا ہے بلکہ ہر مسلمان پر انکی تکفیر کرنا لازم ہے ۔

    آئیے ہم اس مسئلہ کو تفصیلاً واضح کرتے ہیں ۔

    تکفیر کے لحاظ سے لوگ دو گروہوں میں تقسیم کیے جا سکتے ہیں
    اول: اصل کافر
    دوم : اسلام سے ارتدار اختیار کرنے والا




    یعنی جس مسلمان کو علماء و اہل قضاء متفقہ طور پر مرتد قرار نہ دے چکے ہوں ، انکی تکفیر ہر عامی نہیں کرسکتا ، ہاں البتہ جن کی تکفیر علماء اور اہل قضہ کر چکے ہوں ، انہیں ب مسلمان کافر و مرتد قرار و پکار سکتے ہیں ، مثلا قادیانی وغیرہ
    یہ کام محض اہل علم کا ہے ۔ ہم اس میں چھیڑ چھاڑ کے اہل نہیں ! یہ میدان ہمارا ( عوام الناس اور عام اہل علم کا ) نہیں ہے ۔

    میں امید کرتا ہوں اب ٓپکی پریشانی ختم ہوجائے گی ان شاء اللہ
     
    • متفق متفق x 1
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  9. ‏جولائی 29، 2013 #39
    ام کشف

    ام کشف رکن
    جگہ:
    islamabad
    شمولیت:
    ‏فروری 09، 2013
    پیغامات:
    124
    موصول شکریہ جات:
    382
    تمغے کے پوائنٹ:
    53

    تو ہم علماء کے انتظار میں کیوں ہیں جب عدالت نے تمام شروط زائل کردیئے ہیں عجیب بات کی آپ نے یا دوسرے لفظوں میں اچھی ڈنڈی ماری یعنی عدالت میں بیٹھے جج صاحبان وہ کس بنیاد پر فیصلہ زائل کررہے ہیں بات کو آسان لفظوں میں کیجئے یعنی وہ کس دارلعلوم کے فارغ ہیں جنہوں نے تکفیر المعین کی تمام شروط وموانع دیکھنے کے بعد قادیانی کو کافر قرار دیا
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 1
    • لسٹ
  10. ‏جولائی 29، 2013 #40
    علی ولی

    علی ولی مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 26، 2013
    پیغامات:
    68
    موصول شکریہ جات:
    81
    تمغے کے پوائنٹ:
    21

    ڈنڈی تکفیری حضرات مارتے ہیں ضوابط تکفیر میں ، میں نہیں محترمہ!

    محترمہ یہاں ججوں کی قابلیت کا فیصلہ نہیں کیا جا رہا ، بلکہ انکے کردار کی بات کی جا رہی ہے۔

    یعنی ریاستی ادارے کا کیا کردار ہونا چاہیٗے اس مسئلے میں اور ہاں ایک بات واضح رہے اگر علماء اہل السنہ کی جماعت کسی گروہ یا شخص کے کفر متفق ہوجائے اور متفقہ فتوی جاری کر دیں تو وہ گروہ یا شخص مرتد و کافر قرار دیا جائے گا اور بلایا جائے گا۔
    باقی رہی پاکستانی عدالتوں کی بات ، تو وہ دونوں طرف کے دلائل اور براہین سن کر اس علماء کےفتوی کی توثیق یا تردیدکرنے کی مجاز ہیں۔
    یعنی جن افراد کا یہ عہدہ ہے ، وہ بلا شبہ اہل علم اور اہل قضاء ہیں۔ اور محترمہ جب قادیانیوں کا کیس چلا تھا تو عدالت کے ججوں نے تکفیر مسلم کا خوب مطالعہ کر کے ہی کیس چلایا تھا اور علماء کے متفقہ فیصلے کی تائید میں حکم جاری کیا تھا۔ قادیانیوں کے خلاف عدالتی کاروائی کی ساری روداد کتابی شکل میں موجود ہے، پڑھ لیں ، افاقہ ہوگا انشاء اللہ
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں